Story Maker

وہ جن کی چھاؤں میں پلے بڑے ہوئے

Recommended Posts

وہ جن کی چھاؤں میں پلے بڑے ہوئے

ادھر ادھر پڑے ہیں سب کٹے ہوئے

ہزیمتوں کے کرب کی علامتیں

چراغ طاق طاق ہیں بجھے ہوئے

تمام تیر دشمنوں سے جا ملے

کمان دار کیا کریں ڈٹے ہوئے

وصال رت میں ہجر کی حکایتیں

اداس کر گئی ہیں دل کھلے ہوئے

گھروں کی رونقیں وہی جو تھیں کبھی

مگر بھلا دیے گئے گئے ہوئے

تنی تنی سی گردنیں جھکی ہوئی

دعا کو ہاتھ ہیں سبھی اٹھے ہوئے

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now