Sign in to follow this  
Sarfarosh

زندگی ایک سفر ہے سہانا۔

Recommended Posts

زندگی ایک سفر ہے سہانا۔

محبوبہ سے۔ ۔ ۔ ۔

آجائو کچھ دیر کو میرے پاس

ورنہ بے حال میں یہیں مرجائونگا

لڑکی اپنے محبوب سے۔ ۔ ۔

نا بڑھا میری مشکل اسقدر، اب بس کر

بغیر گفٹ کے تو ہرگز نا آئونگی چلی جائونگی

لڑکا اپنی محبوبہ سے تحفہ کا مطالبہ سن کے۔ ۔ ۔ ۔

تاکوں گا تجھے تیری کھڑکی سے بس

گھر تک تیرے نا آئونگا چلا جائونگا

لڑکی اپنے کنگلے محبوب سے۔ ۔ ۔

دیکھ جو لیا تجھ کو کسی نے یہاں اس وقت

سب سے مل کر تجھے پٹوائونگی، مگر نہیں آئونگی

لڑکا کی بے غیری یک دم جاگ گئی، پھر اپنی محبوبہ سے ۔۔ ۔ ۔ ۔

اپنی دہلیز پہ کچھ دیر تو پڑا رہنے دو

جیسے ہی ابا آئیں گے تو چلا جائونگا

لڑکی کے ابا آجاتے ہیں۔ ۔ ۔

کمبخت، بے غیرت تو نے تو کہا تھا اب نا آئونگا

ماروں اور کرونگا رسوا الگ، تھانے تجھے لے جائونگا

بھول گیا وہ آخری ملاقات چار چوٹ کی

لگے ھاتھ جو پانی کا پائپ، بغیر پانی کے تجھے نہلائونگا

لڑکا اپنی محبوبہ کے ابا سے ۔ ۔ ۔

یاد ہے مجھے ہاں یاد ہے وہ بیتے دن اور رات

مجھے اس طرح ڈرائو گے تو کیا چلا جائونگا

مار کھا کھا کے ہو گیا ہے میرا فولادی جسم

کردو شادی ورنہ اسی حال میں بھگالے جائونگا

ابا معاملے کی نزاکت دیکھ کے اپنی لڑکی سے ۔ ۔ ۔

دیکھ رہی کھڑی اوپر سے، یوں میری بربادی

کیا یہی تری آرزو تھی جو دی تھی تجھے آزادی

مارونگا تجھے اتنااور گھسیٹوں گا بھی الگ

اپنے انہی ہاتھوں سے قبرستان تجھے لے جائونگا

لڑکی اپنے ابا سے ۔ ۔ ۔

مار دیجئے کے ہوں گرچہ میں بیٹی ہوں آپ ہی کی

اف تک نا کرونگی چپ چاپ دنیا سے چلی جائونگی

لڑکا جو یہ کھڑاہے ، مجھ پہ یہ مر پڑاہے

پر قصور میرا بڑا ہے ، بن بیاہی ہی مرجائونگی

لڑکا لڑکی کی جذباتی بات سن کر۔ ۔ ۔

رہنے دیجئے کا نا ہواہے اور ناہوگا کچھ اسطرح

بیٹی کو کرکے باپ سے یوں جدا، میں بھی نا رہ پائونگا

ہوجائے اسکی شادی بھی من پسند آپکے

میں جہاں سے آیا ہوں ، واپس وہیں چلا جائونگا

ابا دونوں کی گفتگو سن کر۔ ۔ ۔

کے پانی ہو سر سے اونچا، اس سے پہلے

کردینی چاہیے اپنی بیٹیوں کی شادی

جو رہ پائے گی تو خوش اسکے ساتھ، گر جو ایسا ہے

نا روکوں اب ہرگز تجھے، میں بیاہنے تجھے چلا جائونگا

لڑکا اپنی محبوبہ کے ابا سے ۔ ۔ ۔

سن کے ہماری بات، آپ ہوگئے لاجواب

ملایئےاب ہم س ہاتھ ، پھر میں چلاجونگا

پھر لڑکا اپنی محبوبہ سے ۔ ۔ ۔

رہنا تو تیار، سج دھج آئے گی اب

اپنی اماں کا لائونگا اس بار، نہ اکیلا آئونگا

آخر میں ابا دونوں سے۔ ۔ ۔

نا جو ہوتا جنریسن گیپ، تو ہوتی نا ہم سے مسٹیک

رکھتے ہم تو تمکو اپنے ساتھ، تو آج یوں نا ہوتا ملاپ

پھر بھی جو چلایا ہے تو نے چکر، یاد رکھ

کوئی بھی ذرا جو گڑبڑ کی تو تیرے گھر تک آئونگا

اس سے پہلے لڑکے کی کان مروڑے جاتے ۔ ۔ ۔ لڑکا رفو چکر۔ ۔ ۔ تو اور کیا بابا۔ ۔ ۔شادی کی تیاری نہیں کرے گا کیا۔ ۔ ۔

زندگی ایک سفر ہے سہانا۔ ۔ ۔ یہاں کل کیا ہو کس نے جانا

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

Sign in to follow this