Sign in to follow this  
Guru Samrat

ماچس ہوگی آپ کے پاس۔۔۔۔۔۔۔ از گرو سمراٹ

Recommended Posts

ماچس ہوگی آپ کے پاس۔۔۔۔۔۔۔ از گرو سمراٹ

 

ایک تو ہم میں یہ بڑی خرابی ہے کہ ذرا کوئی ہمارے کالم کی تعریف کردے تو خوشی سے بے حال ہو جاتے ہیں‘ تعریف سنتے ہی اس کائنات کی ہر شے دلفریب اور خوبصورت نظر آتی ہے‘ ساس تک کا منہ اچھا لگنے لگتا ہے‘ گملے میں لگے کیکٹس کے پودے پر گلاب کے پھول کھلتے نظر آتے ہیں‘ پولیس والوں سے گلے ملنے کو جی چاہنے لگتا ہے اور حد تو یہ ہے کہ سیاست دانوں میں بھی خوبیاں نظر آنے لگتی ہیں‘ کبھی کبھی ہم زور سے گنگنانے بھی لگتے ہیں اور گھر والے بڑی مشکل سے چپ کراتے ہیں کہ پڑوسی تعزیت کے لئے نہ آجائیں … مگر افسوس کہ ہمیشہ ہی تعریف نہیں ہوتی‘ کبھی کبھار کوئی قدر ناشناس اور دل جلا قاری تنقید بھی کر بیٹھتا ہے! … ابھی کل ہی ہم بارک اوبامہ کے جیت جانے کی خوشی میں صدر بش کو جی بھر کے کوسنے دے رہے تھے (کہ کسی کے اقتدار سے جانے کے بعد ہی کوسنے دینے اور ملاحیاں سنانے کا بے ضرر‘ نادر موقع ہوتا ہے) کہ اچانک فون کی گھنٹی بجی‘ دوسری طرف سے جو آواز آئی وہ ایک قاری کی تھی جو نہایت سال خوردہ ہونے کے ساتھ ساتھ زندگی سے بیزار بھی نظر آتے تھے‘ فرمانے لگے … ”بھئی سمراٹ میاں! میں آپ کے کالموں کے عنوانات کا پرانا قاری ہوں!“

 

ہم حیران رہ گئے‘ عرض کیا … ”صرف عنوانات؟ پورا کالم آپ نہیں پڑھتے؟“
بولے … ”اتنی فرصت کہاں!“
ہم نے دل پر پتھر رکھ کر ان کا شکریہ ادا کیا کہ اگر وہ عنوانات بھی نہ پڑھتے تو ہم ان کا کیا بگاڑ لیتے … کہنے لگے … ”اپنے پچھلے کالم میں آپ نے یہ کیا حرکت کی جو لکھ دیا کہ … طوطا حال بتائے گا!“
ہم چکرا گئے اور عرض کیا… ”آپ کو طوطے پر اعتراض ہے یا حال بتانے پر؟“
بس وہ بپھر گئے اور کہنے لگے… ”آپ کا اپنے بارے میں ذاتی خیال یہ ہے کہ آپ بڑے اردو داں ہیں‘ زبان وبیان پر مکمل دسترس حاصل ہے جبکہ آپ کی علمیت کا حال یہ ہے کہ توتا آپ نے طوئے سے لکھا ہے جبکہ توتا ہمیشہ ت سے ہوتا ہے‘ بھلا سوچئے‘ عوام اردو کی اتنی بڑی غلطی دیکھے گی تو کیا کہے گی؟“
ہم نے دست بستہ عرض کیا… ”اے چاچائے اردو: اصل غلطی تو آپ خود فرما رہے ہیں کہ اچھے بھلے عوام کو مذکر سے مونث بنادیا‘ براہ کرم خیال رکھئے کہ عوام کہتی نہیں‘ کہتے ہیں یعنی عوام ہوتی نہیں‘ ہوتے ہیں!“
یہ سن کر وہ ہڑبڑا گئے اور کہنے لگے… ”یہ غلط الزام ہے‘ اب تو بڑے بڑے دانشور اور سیاست داں بھی عوام کو مونث ہی کہتے ہیں مگر آپ میرے اعتراض کو ٹالنے کی بجائے یہ بتائیے کہ آپ نے زبان وبیان اور املا کی اتنی بڑی غلطی کیسے کی!!!“
ہمیں نہیں معلوم کہ طوطے سے ان کا کیا جذباتی تعلق تھا‘ کوئی قریبی عزیز داری تھی یا طوطے سے شکل وصورت کی مشابہت کے باعث یار دوست انہیں طوطا کہتے تھے‘ پھر بھی ہم نے رفع شر کی خاطر عرض کیا… ”جناب عالی: ہمیں افسوس ہے کہ طوطے کی خاطر آپ کے جذبات کو ٹھیس پہنچی‘ ممکن ہے آپ ہی درست ہوں اور توتا ت سے ہوتا ہو لیکن ہم کیا کریں کہ طوئے سے طوطا ہمیں زیادہ ہرا نظر آتا ہے۔“
یہ سنتے ہی انہوں نے ہمیں مزید برا بھلا کہا اور وہ ہمیں نیلم پری کے دشمن کالے دیو کی طرح محسوس ہونے لگے جس کی جان طوطے میں تھی۔ ظاہر ہے ہم نے فون منقطع کردیا۔
اب طوطے کا ذکر آہی گیا ہے تو ہم عرض کردیں کہ صرف طوطے ہی قسمت کا حال نہیں بتاتے بلکہ ہمارے معاشرے میں اور بھی بہت سے ”توتے“ ہیں جو نہ صرف قسمت کا حال بتاتے ہیں بلکہ قسمت کی خرابیوں کو ”عملیات“ سے دور کرنے کا دعویٰ بھی کرتے ہیں‘ ان میں وہ عامل بھی ہیں جو اپنے نام کے ساتھ ”پروفیسر“ لکھتے ہیں۔ آپ اگر ان سے پوچھیں کہ… ”بھائی میاں: آپ کس کالج یا یونیورسٹی میں پڑھاتے ہیں؟“ تو یہ پروفیسر حضرات آپ کی ایسی قرار واقعی سرکوبی کریں گے کہ ہاسپٹل میں مرہم پٹی کے لئے جانے سے پہلے آپ انہیں پروفیسر کی جگہ وائس چانسلر تسلیم کر چکے ہوں گے۔ وجہ یہ ہے کہ یہ جعلی عامل اکیلے کبھی نہیں ہوتے ان کے چیلے چانٹے ان کی حفاظت اور منہ پھٹ حضرات کی تسلی بخش مرمت کے لئے قریب ہی موجود رہتے ہیں… جعلی کاموں میں چیلوں کا کردار بہت اہم ہوتا ہے یعنی وہ ”عامل بابا“ کا پبلسٹی ڈیپارٹمنٹ ہوتے ہیں اور بابا کی ایسی شاندار پبلسٹی کرتے ہیں کہ پتہ نہیں ایڈورٹائزنگ ایجنسیاں ان کی خدمت کیوں نہیں حاصل کر لیتیں۔
یہ چیلے اپنے عامل کے بارے میں ضعیف العقیدہ لوگوں میں یہ بات پھیلاتے ہیں کہ بابا بہت پہنچے ہوئے ہیں (اور کئی بار حوالات بھی پہنچ چکے ہیں) ان کے حلقہ اثر میں خواتین بہت جلد آجاتی ہیں اور اپنے طلائی زیورات تک ان جعلی عاملوں پر نچھاور کردیتی ہیں‘ اکثر عامل ان خواتین کو بلیک میل کر کے اپنے مقاصد حاصل کرتے ہیں اور بیشتر عامل منشیات اور عورتوں کی اسمگلنگ میں بھی ملوث ہوتے ہیں۔
جادوگر عاملوں کی وہ قسم نہایت خطرناک ہوتی ہے جو سفلی عمل کرنے کے دعوے دار ہوتے ہیں‘ ان میں سے کچھ لوگ اپنے نام کے ساتھ ”بنگالی“ ضرور لکھتے ہیں‘ غالباً اس کی وجہ یہ ہے کہ روایتی طور پر بنگال کا جادو بہت مشہور ہے‘ عورتیں ان کے پاس اولاد نہ ہونے یا خود پر کسی کا ”اثر“ ہو جانے کی شکایات لے کر آتی ہیں چنانچہ ساس کو بتایا جاتا ہے کہ بہو نے اس پر سفلی عمل کرایا ہے اور بہو سے کہا جاتا ہے کہ ساس نے اس کے لئے ”فلیتہ“ جلوایا ہے۔ یوں ایک ہنستے بستے خاندان میں تفرقہ ڈلواکر اسے تباہ کردیا جاتا ہے‘ وہ خواتین جو پرانی بیماریوں یا ہسسڑیا کی مریضہ ہوں انہیں بتایا جاتا ہے کہ ان پر کسی جن بھوت یا چڑیل کا سایہ ہے اور یہ سایہ دور کرنے کے لئے ہزاروں روپے خرچ ہوں گے۔
سب سے زیادہ قابل رحم حالت عاشق مزاج نوجوانوں کی ہوتی ہے۔ بے چارے محبوبہ کے باپ‘ بھائیوں سے مار بھی کھاتے ہیں پھر بھی عشق سے باز نہیں آتے‘ عام طور پر عامل بابا عاشق نوجوان کو پٹی پڑھاتے ہیں کہ وہ اگر تیس چالیس ہزار روپے ادا کردے تو اسے ایک ایسا عمل بتایا جائے گا کہ چالیس دن کے اندر محبوب اس کے قدموں میں لوٹنے لگے گا‘ عشق میں تو آدمی ویسے ہی عقل سے پیدل ہو جاتا ہے‘ وہ عاشق اتنا نہیں سوچتا کہ اگر کسی کو قدموں میں لوٹتا ہی دیکھنا ہو تو وہ محبوبہ کیوں ہو‘ کتا کیوں نہ پال لیا جائے؟
ایسے ہی ایک سر پھرے عاشق سے خاصی رقم اینٹھ کر عامل بابا نے اسے عمل بتایا تھا کہ وہ عمل آدھی رات کو کسی قبرستان میں بہت پرانی قبر کے پاس ایک ٹانگ پر کھڑے ہو کر پڑھنا ہے… بے چارہ عاشق اندھیری رات میں ایک نہایت ہی پرانی قبر پر پہنچا جہاں قبر کی جگہ ایک گہرا گڑھا رہ گیا تھا‘ اس نے جاتے ہی کہا… ”السلام علیکم یا اہل القبور!“
قبر میں سے آواز آئی… ”وعلیکم السلام! ”پھر خوفناک تاریکی میں قبر کے اندر سے ایک ہیولا ابھرا اور اس نے کہا… ”بھائی صاحب : ماچس ہو گی آپ کے پاس؟“
… مگر وہ ہیولا یعنی گورکن جو قبر میں کسی پرانے مردے کی ہڈیاں ٹھکانے لگارہا تھا اور اس کی موم بتی بجھ گئی تھی‘ عاشق نوجوان کا جواب نہ سن سکا کیونکہ وہ دھڑام سے گر کر بے ہوش ہو چکا تھا۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

wah jee guru maharaj kia shusta zaban hey. her chand keh ahle zuban kay nazdeek ghalat hay pher bhe :swad"aa gia.

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

Sign in to follow this