Recommended Posts

میرانام عمر ہے اور اس سے پہلے میں شہزادی صاحبہ کے ساتھ سیکس کی سٹوری لکھ چکا ہوں اور امید ہے کہ وہ سٹوری سب پڑھنے والوں کو پسند آئی ہو گی اب میں اس کی سہیلی جمیلہ کی سٹوری لکھ رہا ہوں جو اس کے ہوسٹل میں اس کی روم میٹ تھی شہزادی صاحبہ نے ایک دن ڈیٹ پر مجھے بتایا کہ اس کی روم میٹ جمیلہ جو سرکاری محکمہ میں ملازم ہے کو میرے اور تمہارے بارے میں سب کچھ پتا چل گیا ہے اور اسے ڈر ہے کہ جمیلہ کسی اور کو اس بات کے بارے میں نہ بتا دے اس وقت میرے ذہن میں جمیلہ کو بھی چودنے کا خیال آیا میں نے اس کو تسلی دی اور کہا کہ کل وہ اپنے ساتھ جمیلہ کو کھانے پر میرے پاس لے آئے میں اس کو سمجھا دوں گا اگلے روز شام کو سات بجے دونوں کھانے پر میرے ساتھ ہوسٹل سے باہر آگئیں جمیلہ نے نقاب کیا ہوا تھا میں ان کو لے کر ماڈل ٹاﺅن میں بھیا کباب والے کے پاس لے آیا جہاں جمیلہ نے اپنا نقاب اتارا تو میں اس کا حسن دیکھ کر دنگ رہ گیا کیا حسین و جمیل لڑکی تھی اس کے والدین نے یقیناً اس کا حسن دیکھ کر ہی اس کا نام رکھا تھا وہ ہسنتی تو اس کے گالوں میں ڈمپل پڑتے تھے میں اس وقت اس کے جسم کے بارے میں کوئی اندازہ نہیں لگا سکا کیونکہ ابھی بھی اس نے آبا اوڑھا ہوا تھا کھانا کھانے کے بعد میں ان دونوں کو لے کر ماڈل ٹاﺅن پارک میں آگیا جہاں ہم گھاس پر بیٹھ گئے بات چیت کے دوران جمیلہ بار بار میرے اور شہزادی کے افیئر کے بارے میں پوچھ رہی تھی میں کوئی بھی بات بتانے لگتا تو جمیلہ بات کو پلٹ دیتی خیر ایک گھنٹہ تک ہم تینوں بیٹھے رہے اس کے بعد میں نے ان کو ہاسٹل ڈراپ کیا اور بعد میںفون پر شہزادی کو بتایا کہ میں جمیلہ کو بھی چودنا چاہتا ہوں اس طرح وہ کسی کو بھی میرے اور تمہارے بارے میں نہیں بتائے گی پہلے تو اس نے مجھے منع کیا مگر میرے اصرار پر مان گئی میں نے اس کام کے لئے دو دن بعد کا ٹائم رکھا اور اس کو کہا کہ اتوار کے روز میں اس کو لینے کے لئے ہاسٹل آﺅں گا تو وہ جمیلہ کو بھی ساتھ لے آئے طے شدہ پروگرام کے مطابق اتوار کو شہزادی اور جمیلہ کو لے کر واہگہ بارڈر پر واقع اسی ہوٹل میں لے آیا جہاں میں نے شہزادی کو پہلی بار چودا تھا یہاں آکر میں نے ناشتہ منگوایا اور کھانے کے دوران بھی بار بار جمیلہ ہمارے افیئر کے بارے میں پوچھ رہی تھی میں نے اس کو بتانا چاہا تو شہزادی نے منع کردیا کچھ دیر بعد میں نے پلان کے مطابق شہزادی کو کہا کہ میں گاڑی کو لاک کرنا بھول گیا ہوں وہ جاکر گاڑی کو لاک کردے شہزادی جاتے ہوئے گاڑی کے ساتھ کمرے کی چابی بھی لے گئی اس کے جاتے ہی میں نے شہزادی کو پکڑ کر اس کے ہونٹوں کی کس کرلی یہ سب کچھ اتنا اچانک ہوا کہ جمیلہ کو پتا ہی اس وقت چلا جب میرے ہونٹ اس کے ہونٹوں پر تھے اس نے خود کو چھڑوانا چاہا مگر میں نے اس کو مضبوطی سے پکڑا ہوا تھا تھوڑی دیر بعد اس کو مزہ آنے لگا اور اس نے مزاحمت ترک کردی اور میرا ساتھ دینے لگی اب اس کا نیچے والا ہونٹ میرے منہ اور میرا اوپر والا ہونٹ اس کے منہ میں تھا میں نے اپنے ہاتھ اس کی چھاتی پر رکھ دیئے اور اس کے مموں کو آہستہ آہستہ سے دبانا شروع کردیا اس نے مجھ سے کہا کہ شہزادی آجائے گی میں نے اس کو کہا کہ گاڑی کافی دور کھڑی ہوئی ہے ابھی دس منٹ تک شہزادی نہیں آئے گی اس دوران میں نے اس کے کانوں پر بھی کس کیا جب میں نے اپنے ہونٹ اس کی گردن پر رکھے تو وہ مچل سی گئی اب وہ مسلسل میرا ساتھ دے رہی تھی اچانک دروازہ کھلا اور شہزادی اندر آگئی اس وقت ہم دونوں آپس میں چمٹے ہوئے تھے شہزادی کو اندر دیکھ کر جمیلہ حواس باختہ ہوگئی اور اپنی صفائی میں کہنے لگی کہ میں نے کچھ نہیں کیا یہ تو شاکر نے مجھے زبردستی پکڑ کر ایسا کرنا شروع کردیا شہزادی نے اس سے کہا کہ کچھ نہیں ہوتا لگے رہو لیکن جمیلہ کو جیسے سانپ سونگھ گیا ہو وہ پیچھے ہٹ کر بیٹھ گئی اور آنسو بہانے لگی شہزادی نے آگے آکر اس کے آنسو صاف کئے اور اس کو کہا کہ کچھ نہیں ہوتا عمر ہمارا مشترکہ دوست ہے اب بھی جمیلہ مسلسل روئے جارہی تھی پھر میں نے آگے ہوکر اس کو پکڑا اور دوبارہ کسنگ شروع کردی اب جمیلہ نے مجھ سے خود کو چھڑوانے کی کوشش کی مگر میں نے اس کو نہ چھوڑا تھوڑی دیر کے بعد اس نے بھی مزے لینے شروع کردیئے اور میرا ساتھ دینے لگی اس دوران شہزادی نے اپنے سارے کپڑے اتار دیئے اور جمیلہ کو بھی ایسا ہی کرنے کو کہا مگر جمیلہ انکاری ہوگئی مجبوراً شہزادی کو ہی یہ سب کچھ کرنا پڑا شہزادی نے جمیلہ کو پکڑکر اس کا آبا اتارا اس کے بعد اس کی قمیص اتاری تو میں جمیلہ کے بدن کو دیکھتا ہی رہ گیا جیسے سنگ مرمر کا بنا ہوا ہو شہزادی نے اس کا بریزیئر اتارا تو میرے جیسے ہواس ہی گم ہوگئے اڑھتیس سائز کے ممے بالکل ٹائٹ کھڑے ہوئے تھے میں نے فوری طورپر آگے بڑھ کر اس کے ایک نپل کو منہ میں لے لیا اس دوران شہزادی نے اس کا دوسرا نپل اپنے منہ میں لے لیا جمیلہ تو شائد مزے کی کسی اور دنیا میں پہنچ چکی تھی اور سسکاریاں لے رہی تھی میں نے اس کو بیڈ کے اوپر لٹا کر اس کے جسم کو کس کرنا شروع کردیا اور شہزادی اس کے ہونٹوں کو چوس رہی تھی جمیلہ جیسے ماہی بن آب کی طرح تڑپ رہی تھی میں نے اس کی شلوار بھی اتار دی اور اس کے مموں کے بعد اس کے پیٹ اور اس کے بعد اس کی رانوں پر کسنگ شروع کردی اس کا جسم کیا تھا جیسے ریشم کا بنا ہوا ہو جمیلہ مسلسل سسکاریاں لے رہی تھی اب شہزادی نے جمیلہ سے کہا کہ عمر کتنا بے ایمان ہے ہمارے کپڑے اتار دیئے اور خود اپنی شرٹ بھی نہیں اتاری اب شہزادی نے میرے کپڑے اتار دیئے میرا آٹھ انچ کا لن دیکھ کر جمیلہ کو جیسے سکتا ہوگیا وہ دو منٹ تک میرا لن ہی دیکھتی رہی اس نے اپنی نظر اس وقت میرے لن سے ہٹائے جب شہزادی نے اس سے کہا کہ اس کو نظر نہ لگا دینا اب ہم تینوں کمرے میں ننگے لیٹے ہوئے تھے میں اور شہزادی جمیلہ کو اور کبھی ایک دوسرے کو کسنگ کررہے تھے جبکہ جمیلہ شائد شرم کی وجہ سے ہمیں کسنگ نہیں کررہی تھی جبکہ وہ فل گرم ہوچکی تھی اب میں نے شہزادی کو اشارہ کیا تو اس نے جمیلہ کی چوت پر منہ رکھ کر اس کو زبان سے چودنا شروع کردیا اس اقدام پر جمیلہ بری طرح مچلنے لگی تھوڑی دیر بعد جمیلہ کی چوت نے پانی چھوڑ دیا تو شہزادی تمام پانی پی گئی اب وہ میرے لن کی طرف ہوئی اور میرا لن منہ میں لے کر اس کو لالی پاپ کی طرح چوسنا شروع کردیا میرا آٹھ انچ کا لن اس کے منہ میں پورانہیں آرہا تھا میں مسلسل جمیلہ کے جسم کو کسنگ کررہا تھا تھوڑی دیر کے بعد جمیلہ دوبارہ گرم ہوگئی اور میرا لن بھی پوری طرح اس کی چوت پھاڑنے کے لئے تیار تھا میں جمیلہ کی دونوں ٹانگوں کے درمیان میں آگیا اور اپنا لن اس کی چوت پر رگڑنا شروع کردیا اب جمیلہ مزے کی انتہا کو پہنچ رہی تھی اور منہ سے مسلسل آہ ہ ہ ہ ہ ہ ہ اف ف ف ف ف م م م م م م م کی آوازیں نکا رہی تھی میں نے شہزادی کو جمیلہ کے سر کی طرف جا نے کا کہا اور اس کی ٹانگیں شہزادی کو پکڑا دیں شہزادی نے ہاتھوں سے جمیلہ کی ٹانگیں پکڑیں اور اپنے ہونٹ اس کے ہونٹوں پر رکھ دیئے میں نے جھٹکا لگا کر اپنا لن اس کے اندر کیا ابھی آدھا لن ہی اندرگیا تھا اور جمیلہ چیخنے لگی مگر اس کی چیخیں شہزادی کے منہ میں ہی رہ گئیں میں تھوڑی دیر کے رکا اور پھر ایک اور زور دار جھٹکا دیا اور میرا آٹھ انچ کا لوڑا جڑ تک اس کے اندر چلا گیا جمیلہ کی چیخیں تو شہزادی کے منہ میں تھیں مگر اس کو جتنی درد ہورہی تھی اس کا اندازہ اس کی آنکھوں سے نکلنے والے آنسوﺅں سے لگایا جا سکتا تھا وہ درد سے مسلسل کراہ اور تڑپ رہی تھی میں نے اب دس منٹ تک کوئی حرکت نہ کی تو وہ نارمل ہوگئی شہزادی نے جیسے ہی اس کے ہونٹوں سے اپنے ہونٹ ہٹائے کہنے لگی اسے باہر نکالو شہزادی نے اس سے کہا کہ جتنی درد ہونی تھی ہوچکی اب تو مزہ لینے کا وقت ہے مگر وہ مسلسل مجھے لن باہر نکالنے کے لئے کہہ رہی تھی جبکہ اس کے ساتھ ساتھ نیچے سے بھی حرکت کررہی تھی کہ شائد کسی طرح اس کی جان چھوٹ جائے مگر اب اس کی کہاں چلتی تھی وہ بے بس ہوچکی تھی تھوڑی دیر کے بعد میں نے اپنے لن کو حرکت دینا شروع کی تو اس کو درد کے ساتھ ساتھ مزہ بھی آنے لگا وہ اب نیچے سے نکلنے کی بجائے مزہ لے رہی تھی پانچ منٹ کی چدائی کے بعد اس کی پھدی نے پانی چوڑنا شروع کردی مگر میں ابھی تک فارغ ہونے کے قریب بھی نہ تھا میں نے اس کے فارغ ہونے کے بعد اس کی چوت سے اپنا لن نکال لیامیں دیکھا بیڈ کی چادر خون سے بھری پڑی تھی جمیلہ نے دیکھا تو خوفزدہ ہوگئی مگر شہزادی نے اس کو بتایا کہ یہ سب کچھ پہلی بار ہر لڑکی کے ساتھ ہوتا ہے میرا لن ابھی تک کھڑا ہوا تھا شہزادی نے دیکھا تو فوری طورپر اس کو آگے بڑھ کر منہ میں لے لیا تھوڑی دیر کے بعد وہ بیڈ پر لیٹ گئی اور مجھے چدائی کرنے کے لئے کہا میں نے اس کی ٹانگیں اپنے کندھوں پر رکھیں اور زور زور سے جھٹکے لگانے شروع کردیئے پانچ منٹ کا فاصلہ طے کرکے ہم دونوں اکٹھے فارغ ہوگئے اس کے بعد تینوں بیڈ پر ننگے ہی لیٹ کر باتیں کرنے لگے جمیلہ نے بتایا کہ اس کے دفتر میں کئی لوگ اس کو گندی نظروں سے دیکھتے ہیں ایک دن کو اس کے ایک افسر نے اس کو دوستی کرنے کے عوض ترقی کا لالچ بھی دیا مگر اس نے انکار کردیا اس دوران شہزادی صاحبہ مسلسل میرے لن کو سہلا رہی تھیں کچھ دیر کے بعد میں دوبارہ تیار ہوا تو جمیلہ نے مزید کچھ کرنے سے یہ کہتے ہوئے انکار کردیا کہ ابھی پہلی بار کرنے کا بہت درد ہورہا ہے میں نے اب شہزادی صاحبہ کے ساتھ پیچھے کے سوراخ سے کرنے کا فیصلہ کیا جب اس کو آگاہ کیا تو اس نے انکار کردیا مگر میرے اصرار پر مان گئی میں نے اس کو گھوڑی بنایا اور اس کی گانڈ پر تھوک لگا کر اس میں انگلی ڈال کر ذرا سوراخ کو رواں کیا اور اپنا لن اس پر رکھ کر تھوڑا سا زور لگایاتو شہزادی صاحبہ کی چیخنا شروع ہوگئیں میں نے اس کو کہا کہ کچھ بھی نہیں ہوگا تھوڑی سی دیر میں مزے آنے لگیں گے اب جمیلہ نے بھی شہزادی کو شرم دلائی کہ میری بار تو تم نے میرے منہ پر اپنا منہ رکھا ہوا تھا اور کہا تھا کہ درد سے زیادہ مزہ آئے گا اب کیوں چیخ رہی ہو جس پر شہزادی چپ ہوگئی میں نے جمیلہ کو کہا کہ وہ آگے آکر اس کے سامنے کھڑی ہوجائے اور جب شہزادی چیخنے لگے تو اس کا منہ پکڑ لے اس نے ایسا ہی کیا میں نے اس موقع کو غنیمت جانا اور زور زور سے دو تین جھٹکے مار کر اپنا لن اس کی گانڈ کی وادیوں میں گم کردیا مجھے حیرت ہوئی کہ شہزادی کو کچھ بھی نہیں ہوا بعد میں معلوم ہوا کہ جمیلہ نے اس کے منہ کے اندر کپڑا دے کر اس کو زور سے پکڑ رکھا تھا شہزادی کی گانڈ اتنی تنگ تھی کہ میرے لن کو بھی اندر جاتے ہوئے تکلیف ہورہی تھی بہرحال دس منٹ کے بعد میں اس کی گانڈ کے اندر ہی چھوٹ گیا میرا لنڈ باہر نکلتے ہی شہزادی نڈھال ہوکر بیڈ پر گر گئی جمیلہ نے اس کو پانی پلایا تو اس کے حواس بحال ہوئے اس کے بعد شہزادی نے مجھے بہت برا بھلا کہا اور کہا کہ تم جانور ہو میں آئندہ کے بعد تم سے کبھی نہیں ملوں گی لیکن تھوڑی دیر کے بعد اس شرط پر مان گئی کہ آئندہ کبھی بھی پیچھے کے راستے پر نہیں جاﺅں گا اس کے بعد شام تک ہم تینوں باتیں کرتے رہے شہزادی نے جب جمیلہ کو بتایا کہ اس کو کسی طرح اس ” محفل“ میں لایا گیا ہے تو وہ بہت حیران ہوئی کہ شہزادی نے میرے ساتھ مل کر کیسے پلان بنایا بہرحال وہ اس بات پر خوش تھی کہ اس کو انجوائے کرنے کے لئے ایک دوست مل گیاتھا شام کو میں نے ان کو ہاسٹل ڈراپ کرکے خود گھر آگیا اس کے بعد کئی بار جمیلہ کے ساتھ اکیلے بھی ملاقات ہوئی لیکن اکثر وہ دونوں اکٹھے ہی میرے ساتھ ”سیر وتفریح“ کے لئے جاتی تھیں کچھ عرصہ کے بعد جمیلہ کی ٹرانسفر شیخوپورہ ہوگئی اب اس کے ساتھ فون پر ہفتہ میں ایک آدھ بار بات چیت ہوجاتی ہے مگر ابھی تک ملاقات نہیں ہوسکی

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now