Jump to content
URDU FUN CLUB

imran_pia

Members
  • Content count

    45
  • Joined

  • Last visited

Community Reputation

85

1 Follower

About imran_pia

  • Rank
    Registered User

Profile Information

  • Gender
    Male
  1. imran_pia

    بدلہ از سٹوری میکر

    MARD MOHABAT KO JITNA PAKEEZA BNANA CHAHE MAGAR AZAA SATH CHOR JATY HAUN... SOLAA AANY THEEK KAHA.. AGAR AP MUJHY LINK NA DAITY TU ITNI ACHI STORY PARHNY SY MEHROOM REHTA... MUJHY YAKEEN NAI AA RAHA K STORYMAKER ITNA ACHA LIKH BHI SKTA HAI... MERI TARAF SY ITNI ACHI KAHANI KI SHIROAAT PA APKO MUBARK HO..
  2. imran_pia

    ذکر اُس پری وش کا

    بہت ہی عمدہ خاکہ کھینچا گیا ہے۔ جو ادیب کے خانم شناس ہونے کی نشاندہی کرتا ہے۔
  3. imran_pia

    WORLD CUP 2015 GAME COMPETITION

    south africa
  4. imran_pia

    لڑکی کی پسند کی شادی

    بھائی جی سب سے اہم بات کہ جو چیز ہم کو پسند ہوتی ہے ہم اُس کے لئے تگ و دو کرتے ہیں۔۔اگر ہم اپنی پسند کی پھدی مارنے کی خواہش کر سکتے ہیں تو خواتین کو بھی پورا پورا حق ہے اپنی مرضی کے لن کی سواری کرنے کا۔۔۔اب دیکھیں نہ بھائی پھدی تو خواتین کے پاس ہی ہے۔۔اور جو چیز جس کی ملکیت ہے اُسے پورا پورا حق ہے جیسے چاہے استعمال کرے یا کسی کالے چور کو دے۔۔
  5. imran_pia

    لڑکی کی پسند کی شادی

    بالکل جناب۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
  6. imran_pia

    لڑکی کی پسند کی شادی

    ڈئیر سیدھی اور صاف بات ہے۔۔اس میں ڈیٹیل کی ضرورت نہیں۔۔دنیا کے انسانی حقوق کے بل کو ملاحضہ کریں۔۔اُس بل میں آپ کو حق دیا جاتا ہے اپنی پسند کی شادی کرنے کا۔۔دنیا کےکے تمام ممالک نے اقوامِ متحدہ کے اُس بل پہ دستخط کئے ہیں۔۔اور یہ بتانے کی ضرورت نہیں ہے کہ وہ بل کون سے مذہب کی تعلیمات سے متاثر ہو کر بنایا گیا ہے۔۔۔مزہبی ،علاقائی،لسانی غرض ہر لحاظ سے پسند کی شادی کی اجازت دی گئی ہے۔۔اور جو کوئی اعتراض کرے یقینی طور پہ وہ جاہل انسان ہی گا۔۔
  7. imran_pia

    لڑکی کی پسند کی شادی

    ہونا چاہیئے۔
  8. imran_pia

    WORLD CUP 2015 cricket game

    چوکرز میرے فیورٹ ہیں۔۔۔
  9. ڈئیر پولیو سے تو بچ جاتے ہیں مگر مزید بہت سی بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں۔میں نے تو یہ تک سنا ہے کہ پولیو ڈراپس میں ایسے جرثومے پائے جاتے ہیں جو مردانہ طاقت کو بے حد نقصان پہنچاتے ہیں۔۔جس سے آدمی کی بچے پیدا کرنے والے کیپیسٹی گھٹ جاتی ہے۔۔
  10. imran_pia

    pak vs india takra in world cup 2015

    ڈئیر 13 مارکس میں دے دیتا ہوں۔۔کےڈی اور مارکس ملا کر 33 ہو گئے ۔۔اب 15 فروری کو دیکھتے ہیں۔۔
  11. imran_pia

    pak vs india takra in world cup 2015

    پیارے بھائی ورلڈ کپ میں انڈیا کو کوئی معجزا ہی ہرا سکتا ہے۔۔اُسکی وجہ یہ ہے کہ پاکستان آج تک انڈیا سے ورلڈ کپ میں کھیلا جانے والا کوئی میچ نہیں جیت سکا۔۔۔
  12. وسیم اکرم ورلڈ کپ میں دراز قامت فاسٹ بولر عرفان پاکستان کا اہم ہتھیار ہوگا، وسیم اکرم وسیم اکرم نے امید ظاہر کی ہے کہ ورلڈ کپ میں پاکستانی پیسر محمد عرفان عمدہ پرفارمنس پیش کرپائے گا۔ آئی سی سی کے لے تحریر کردہ اپنے کالم میں وسیم اکرم کا کہنا تھا کہ وہ ڈیل اسٹین، مچل جونسن، ٹم ساؤتھی، جیمز اینڈرسن اور محمد عرفان کو اس ورلڈ کپ کے ٹاپ بولرز میں شمار کرتے ہیں، عرفان اپنی بلند قامت سے آسٹریلیا میں خطرناک ثابت ہوسکتا ہے لیکن اسے سیکھنا چاہیے کہ گیند کہاں پچ کی جاتی ہے۔ اسٹین کی طرح وہ اپنے جوش سے کسی بھی مضبوط بیٹنگ لائن کو تباہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ سابق کپتان نے مزید کہا کہ میں کوئی خوف نہیں بڑھانا چاہتا، لیکن موجودہ ورلڈ کپ بولرز کیلیے چیلنجنگ ہوگا، خصوصا برصغیر کے بولرز کو یہاں مشکل پیش آسکتی ہے، ایڈیلیڈ اور سڈنی کی وکٹیں اسپنرز کو مددگار ہوگی جبکہ یہاں پر بیٹنگ کیلیے بھی ماحول سازگار ہوگا، اسی طرح میلبورن کی وکٹ سیمرز کیلیے معاون ہوتی ہے۔ ٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭ سعید اجمل بالنگ کی پابندی سے آزاد ہونے والے سٹار پاکستانی سپنر سعید اجمل نے کہاہے کہ اس مرتبہ پاکستان ہندوستان کو شکست دے کر ورلڈ کپ میں نئی تا ریخ رقم کرے گا ۔ آئی سی سی کی جانب سے بالنگ ایکشن کلیئر قرار دیے جانے کے بعد پہلی مرتبہ پی سی بی اکیڈمی انڈر 19 اور پی سی بی اکیڈمی انڈر 17 ٹیموں کے درمیان ایل سی سی اے گراونڈ میںمیچ کھیلا اور بالنگ پریکٹس کی۔اس موقع پر انہوں نے کہا کہ میگا ایونٹ کے لئے طلب کیا گیا تو ضرور جاوں گا ۔ اجمل نے کہا کہ مجھے ردھم میں آنے کے لیے میچ پریکٹس درکار ہے اور کوشش کر رہا ہوں کہ جلد از جلد اپنی پرانی فارم بحال کر سکوں۔ورلڈ کپ میں پاکستان اور انڈیا کے درمیان میچ کے حوالے سے سوال پر ورلڈ کلاس سپنر نے کہا کہ ہندوستانی ٹیم آسٹریلیا میں مستقل شکستوں سے دوچار ہے اور پاکستان بھی شکستیں کھا رہا ہے لہٰذا دونوں ٹیمیں ہی مشکلات سے دوچار ہیں ۔ یاد رہے کہ محمدحفیظ کے ورلڈ کپ سکواڈ سے باہر ہونے پر سعید اجمل کی اہمیت میں اضافہ ہوا ہے کیونکہ اس وقت قومی ورلڈ کپ سکواڈ میں کوئی آف سپنر نہیں اور حفیظ کے ٹیسٹ دے کر پاس ہونے کی امید ان کے زخمی ہونے پر پہلے ہی دم توڑ گئی ہے ۔٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭ ورلڈ کپ میں سب سے تجربہ کار کھلاڑی آئی سی سی کرکٹ ورلڈکپ کا آغاز تین دن بعد یعنی 14 فروری کو ہورہا ہے جس میں مجموعی طور پر 210 کھلاڑی آنکھوں میں کامیابی کا خواب سجائے شرکت کررہے ہیں۔کرکٹ کی دنیا کے اس سب سے بڑے ٹورنامنٹ میں شریک ٹیمیں یقیناً اپنے سب سے تجربہ کار کھلاڑیوں پر زیادہ انحصار کریں گی جو نوجوان کرکٹرز کے اندر جوش اور آگے بڑھنے کی تحریک پیدا کرنے میں مدد فراہم کریں گے۔تاہم کیا آپ کو معلوم ہے کہ اس ایونٹ میں شریک دس سب سے سنیئر کھلاڑی کون اور کس ملک سے تعلق رکھتے ہیں؟ اس کا جواب بہت کم لوگوں کو ہی معلوم ہوگا۔تو نیچے آسٹریلیا و نیوزی لینڈ میں ہونے والے ورلڈکپ میں شریک سب سے سنیئر کھلاڑیوں کی فہرست اور مختصر معلومات دی جارہی ہے جو پرستاروں کے لیے یقیناً دلچسپی کا باعث ہوگی۔ مہیلا جے وردنے، سری لنکا سری لنکن ٹیم میں شامل مہیلا جے وردنے کرکٹ ورلڈکپ 2015 میں سب سے تجربہ کار کھلاڑی کی صورت میں شرکت کررہے ہیں۔سری لنکا کے عظیم ترین کرکٹرز میں سے ایک جے وردنے نے اپنے کرکٹ کیرئیر کا آغاز 1997 میں کیا تھا اور اب یہ پانچواں موقع ہے جب وہ کرکٹ ورلڈکپ میں شرکت کررہے ہیں جبکہ وہ مجموعی طور پر میگاایونٹ میں اب تک 33 میچز کھیل چکے ہیں۔انہوں نے 2007 کے ورلڈکپ میں سری لنکن کپتان کے طور پر شرکت کی تھی اور سیمی فائنل میں نیوزی لینڈ کے خلاف میچ وننگ سنچری اسکور کی تھی جبکہ 2011 کے ورلڈکپ کے فائنل میں بھی وہ 88 گیندوں پر 103 رنز بناکر نمایاں رہے تھے تاہم بدقسمتی سے سری لنکا کو ہندوستان کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ کمار سنگا کارا، سری لنکا سری لنکا کے ہی وکٹ کیپر بیٹسمین کمار سنگاکارا 2015 میں اپنے چوتھے ورلڈکپ میں شرکت کریں گے، اس سے پہلے وہ 2003، 2007 اور 2011 کے ایونٹس میں شرکت کے دوران تیس میچز کھیل چکے ہیں۔کمار سنگاکارا آخری ورلڈکپ میں سری لنکن کے کپتان تھے جس کے دوران انہوں نے نو میچز میں شرکت کرتے ہوئے 465 رنز بنائے جس میں نیوزی لینڈ کے خلاف 111 رنز کی اننگ سب سے نمایاں تھی۔ برینڈن میککلم، نیوزی لینڈ اپنے جارحانہ انداز سے مقبول نیوزی لینڈ کے کپتان برینڈن میککلم اپنی ٹیم کے بھی سب سے تجربہ کار کھلاڑی ہیں۔برینڈن بھی چوتھی بار کرکٹ ورلڈکپ میں شرکت کررہے ہیں اور اس سے پہلے وہ اپنی ٹیم کی جانب سے میگا ایونٹ کے 25 میچز کھیل چکے ہیں جس کے دوران انہوں نے 31 کی اوسط کے ساتھ 414 رنز بنائے۔ورلڈکپ میں تیز ترین نصف سنچری کا ریکارڈ بھی میککلم کے ہی نام ہے جو انہوں نے 2007 میں کینیڈا کے خلاف صرف 20 گیندوں میں بنایا تھا۔ ڈینیئل ویٹوری، نیوزی لینڈ یہ کیوی اسپنر کا پانچواں ورلڈکپ ہوگا اور دلچسپ بات یہ ہے کہ میککلم سے زیادہ میگا ایونٹس میں شرکت کے باوجود ان کے میچز کی تعداد صرف 23 ہے۔لیفٹ آرم اسپنر کے انٹرنیشنل کیرئیر کا آغاز 1997 کے شروع میں ہوا تھا اور وہ 1999، 2003، 2007 اور 2011 میں کیوی اسکواڈ کی نمائندگی کرتے نظر آئے۔ورلڈکپ میچز میں ان کی بہترین باﺅلنگ 2007 کے ٹورنامنٹ میں آئرلینڈ کے خلاف میچ میں رہی جس میں انہوں نے 23 رنز دیکر چار کھلاڑیوں کو آﺅٹ کیا۔ شاہد آفریدی، پاکستان کرکٹ ورلڈکپ کے تجربہ کار ترین کھلاڑیوں میں پاکستانی اسٹار آل راﺅنڈر کا نمبر پانچواں ہے اور دلچسپ بات یہ ہے کہ آسٹریلیا و نیوزی لینڈ میں کھیلے جانے والا ایونٹ ان کا 5 واں ورلڈکپ بھی ہے۔اپنے بلند و بالا چھکوں اور بہترین لیگ اسپن باﺅلنگ کی بدولت جانے والے شاہد آفریدی نے اس سے پہلے 1999، 2003، 2007 اور 2011 کے ورلڈکپس میں شرکت کی اور اس دوران بیس میچز کھیلے۔ان کی سب سے بہترین ورلڈکپ باﺅلنگ 2011 میں سامنے آئی جب کینیا کے خلاف انہوں نے صرف 16 رنز کے عوض 5 وکٹیں حاصل کیں۔ کرس گیل، ویسٹ انڈیز کرس گیل 1999 سے ویسٹ انڈین ٹیم کا حصہ ہیں اور وہ 2015 میں چوتھی بار کرکٹ ورلڈکپ کھیلنے کا اعزاز حاصل کریں گے۔مخالف ٹیم کو اپنی بیٹنگ اور باﺅلنگ سے تباہ کردینے والے کرس گیل نے اب تک میگا ایونٹ کے بیس میچز میں شرکت کی ہے اور ویسٹ انڈیز کی ورلڈکپ مہم کا بڑا انحصار ان کی کارکردگی پر ہی ہوگا۔ تلکارتنے دلشان، سری لنکا تین سو سے زائد میچز کھیلنے والے تلکا رتنے دلشان کے لیے یہ ورلڈکپ میں شرکت کا تیسرا موقع ہوگا۔اس سے پہلے وہ بیس ورلڈکپ میچز میں شرکت کرچکے ہیں اور 2011 کا ایڈیشن ان کے لیے بہت زبردست ثابت ہوا جس میں وہ نو میچوں میں پانچ سو سے زائد رنز اسکور کرکے نمایاں ترین بلے بازوں میں سے ایک رہے تھے۔اس ایونٹ میں ان کی سب سے بہترین کارکردگی 144 اور 108 رنز ناٹ آﺅٹ رہے تھے۔ جیمز اینڈرسن، انگلینڈ انگلینڈ کے جیمز اینڈرسن کے لیے بھی یہ چوتھا ورلڈکپ ثابت ہوگا۔ورلڈکپ کیرئیر کے آغاز میں ہی جیمز اینڈرسن نے پاکستان کے خلاف بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 29 رنز کے عوض 4 وکٹیں حاصل کرکے میچ اپنی ٹیم کے نام کیا اور مین آف دی میچ لے اڑے۔اب میگا ایونٹ کے انیس میچز میں وہ 22 وکٹیں اپنے نام کرچکے ہیں اور وہ اس میں مزید اضافہ کرنا چاہتے ہیں ۔ مائیکل کلارک، آسٹریلیا آسٹریلیا کے کپتان مائیکل کلارک کی ورلڈکپ میں شرکت کے بارے میں ابھی بھی یقینی طور پر کچھ نہیں کہا جاسکتا تاہم اگر وہ شرکت کرتے ہیں تو وہ اپنی ٹیم کے سب سے سنیئر کھلاڑی ہوں گے۔تیسرے ورلڈکپ ایونٹ میں شرکت کرنے مائیکل کلارک اب تک 18 میچز کھیل چکے ہیں تاہم دلچسپ بات یہ ہے کہ وہ اب تک کرکٹ کی دنیا کے اس سب سے بڑے ٹورنامنٹ میں کوئی سنچری اسکور نہیں کرسکے ہیں۔ یونس خان، پاکستان ورلڈکپ کے سب سے سنیئر کھلاڑیوں کی فہرست میں دسویں اور آخری نمبر پر یونس خان ہیں جو اب تک اس میگا ایونٹ کے سولہ میچز کھیل چکے ہیں۔پاکستانی ٹیم کی بیٹنگ لائن کی ریڑھ کی ہڈی سمجھے جانے والے یونس خان کے لیے یہ چوتھا میگا ایونٹ ہوگا تاہم یہ بھی اب تک میگا ایونٹ میں سنچری اننگ کھیلنے میں ناکام رہے ہیں۔ ٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭ ورلڈ کپ کا فاتح کون ہو گا(ربوٹ کی پیشین گوئی) نیوزی لینڈ کی کینٹربری یونیورسٹی کے ایک روبوٹ نے پیشن گوئی کی ہے کہ افغانستان ورلڈکپ2015کا سہرااپنے سرپرسجالے گا۔ کینٹربری کے پی ایچ ڈی کے طالب علم ایڈوارڈو سینڈووال نے پیشن گوئی کرنے والاروبوٹ تیارکیاہے جس کانام اکرام رکھاگیا ہے ،روبوٹ نے 14ممالک کے پرچم کودیکھنے کے بعد بھارت،ویسٹ انڈیز،اسکاٹ لینڈ،نیوزی لینڈ اور افغانستان کو چن لیا جس کے بعد افغانستان کو فاتح کے طورپر منتخب کرلیا۔ افغانستان ورلڈکپ کے گروپ اے میں شامل ہے جہاں سابق چمپین آسٹریلیا،بنگلہ دیش،انگلینڈ،نیوزی لینڈ،اسکاٹ لینڈ اورسری لنکا جیسی ٹیمیں موجودہیں۔ افغانستان کے ورلڈچمپین بننے کے امکانات صفر سے بھی کم ہیں تاہم روبوٹ کے خالق طالب علم کاکہناہے کہ یہ پیشن گوئی بظاہر غیر حقیقی ہے لیکن کرکٹ ایساکھیل جس کانتیجہ غیرمتوقع ہوتاہے۔ روبوٹ کانام مصری نڑاد میکسیکن فلسفر اکرام آنتاکی کے نام کی نسبت سے رکھاگیاہے۔ طالب علم کاکہناہے کہ وہ پال آکٹوپس سے متاثرتھے جو2010فٹ بال ورلڈکپ میں کامیاب پیشن گوئی کررہاتھاجس کے بعد انھوں نے فیصلہ کیاکہ اکرام کی پیشن گوئی کی صلاحیتوں کوبھی آزمایاجائے۔
×