Jump to content
URDU FUN CLUB

DR KHAN

Co Administrators
  • Content Count

    2,400
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    890

DR KHAN last won the day on June 24

DR KHAN had the most liked content!

Community Reputation

12,688

About DR KHAN

  • Rank
    Best Writer

Profile Information

  • Gender
    Male
  • Location

Recent Profile Visitors

11,144 profile views
  1. جناب اس کی آنے والی اپڈیٹس آپ لوگوں کو اور بھی چونکا دیں گی۔ بس نوک پلک درست کر رہا ہوں۔ دوم اگلے ہفتے میں پردیس اپڈیٹ نہیں کر پاؤں گا اس لیے اسی ہفتے پردیس کو اپڈیٹ کیا جانا ہے۔ اس پہ کام چل رہا ہے۔
  2. طبیعت ٹھیک ہے اور کام بھی کر رہا ہوں مگر ان دنوں کچھ دیگر سلسلوں پہ کام چل رہا ہے۔
  3. اکری کی بہن کے ساتھ کچھ اچھا یا برا کیوں ہو گا یا ہو سکتا ہے اس کا جواب ہیرو کی ہی زبانی آپ کو مستقبل کی اپڈیٹس میں مل جائے تو زیادہ بہتر رہے گا اور اس کی اصل وجہ بھی سامنے آئے گی جس کو ابھی بیان کرنا مزے کو کرکرا کر دے گا۔انتظار کیجیے اور ضوفی کا چیپٹر کلوز نہیں ہوا، سب کھلے ہیں اور سب ایک دوسرے سے منسلک ہیں۔
  4. آپ کی بات سو فیصد درست ہے مگر اگر ہم غور کریں تو میڈیا سے لے کر تمام مواد میں اب تمام چیزیں تفصیل سے دکھائی جانے لگیں ہیں۔ ایسی کہانی جس کی بنیاد جنس ہو اور اس میں تفصیل کی کمی ہو تو قاری اسے شاید پسند نہ کریں۔ جو بات آپ نے کہی وہ ایک سلجھی ہوئی بات ہے اور اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ کوئی کتنا حساس ہے مگر آپ دیکھ لیں کہ سیکس ہو یا ایکشن اب سب میں شدت پسندی آ گئی ہے۔کیونکہ معاشرہ شدت پسندی کی جانب جا رہا ہے
  5. بات دراصل یہ ہے کہ اس کہانی کے علاوہ بھی کہانیاں اور وہ پیڈ فائلز ہیں۔ ان کے قارئین کو کم اپڈیٹ مل پاتی ہے اوریہاں جلدی ہو جاتی ہے۔یہ ان کے ساتھ بھی ناانصافی ہے۔ وہ قیمت ادا کر کے محروم ہیں تو یہاں قیمت صرف ایکٹیو شمولیت ہے۔ اگر یہ بھی نہ ہو تو ہمیں اس کا اپڈیٹ کرنے کی کوئی ضرورت باقی نہیں رہتی نا۔ چلیں ایک تو بہانہ ہو گا اس کو اپڈیٹ کرنے کا کہ یہ اکثریت کی پسند ہے اور سب کی فرمائش ہے اسی لیے اس کی اپڈیٹ کی رفتار تیز ہے۔
  6. دیکھیں کہانی کے ٹیمپو میں تبدیلی آئی ہے۔ اگر غور کریں تو معلوم ہو گا کہ بات صرف دو چار دنوں کی ہے، ہم نے دو چار دنوں کا سفر مہینوں میں طے کیا ہے۔ یاسر کی زندگی میں اتنے اتارچڑھاؤ بہت کم مدت میں آئے ہیں اور ایک موڑ جب آتا ہے تو اس کی ساری توانائی اسی جانب لگ جاتی ہے۔ کہانی اس انداز میں لکھی جا سکتی ہے کہ ایک پوری اپڈیٹ یاسر اور ضوفی یا اس کی فیملی کی دوستانہ باتیں ہوں،کچھ ذو معنی باتیں ہوں اور کچھ پیار بھری نظریں ہوں اور ایک عدد ہلکا سا فور پلے۔ دوسرا طریقہ کار یہ ہے کہانی کی کم اپڈیٹ میں کہانی آگے بڑھے اور ایک کے بعد ایک نئی چیز برق رفتاری سے میسر ہو۔ میں یہ مانتا ہوں کہ مجھ سے اتنی لمبی کہانی نہیں لکھی جاتی تو بجائے ایک پوری اپڈیٹ چند باتوں یا گپ شپ پہ مرکوز ہو، میری کوشش ہوتی ہے کہ کہانی کا اگلا حصہ سامنے آ جائے۔اسی کہانی کو بہت سست روی سے بھی بڑھایا جا سکتا ہے۔ اس سے یہ ہوگا کہ اپڈیٹ میں باتیں زیادہ ہوں گی۔ دو دو صفحے ضوفی سے باتیں، جنید سے باتیں، ایک ایک سے باتیں اور کہانی کو لمبا بڑھایا جا سکتا ہے۔
  7. دیکھیں کہانی کی ڈیمانڈ کے مطابق ہی چلنا پڑے گا۔اب یہ ممکن نہیں کہ جو کچھ بھی چل رہا ہو مگر ایک ملاقات ضوفی سے طے ہو۔اگر کہانی میں کہیں ضوفی کی اہمیت ہوتی ہے اور جہاں اشد ضرورت وہاں وہ ہو گی اور آپ کو اس کی غیرموجودگی کی شکایت بھی نہیں ہو گی۔
  8. آپ کی بھیجی گئی فائل مجھے موصول ہو گئی ہے اور میرا جوابی تحفہ بھی آپ کو ارسال کر دیا گیا ہے۔
  9. کہانی کی اگلی اپڈیٹ کی تاریخ کا تعین قارئین کے ہاتھ میں ہے۔ کہانی پہ جتنے زیادہ مفید کمنٹس ہوں گے کہانی اتنی جلدی اپڈیٹ ہو گی۔ یہ فطری بات ہے کہ جو سلسلہ زیادہ مقبول ہوگا اس کی اپڈیٹ اسی رفتار سے ہوگی۔ کمنٹس مفید ہونے چاہیئں چاہے تنقید ہی کیوں نہ ہو۔
  10. آپ یقین کریں کہ ہمارے ایکشن سلسلوں میں سیکس نہ ہونے کے برابر ہے اور قاری گلہ کرتے ہیں کہ کیوں نہیں ہے۔ ان میں جتنے مار ہیرو کو پڑتی ہے وہ کسی کو کبھی نہیں پڑی، سچ بتائیں کہ کیا جمیل جتنی پٹائی کبھی کسی کی ہوئی ہے یا کاشف لاشاری جیسی لاچاری کسی کے حصے میں آئی ہے کہ اس کے ہاتھ باندھ کر اس کو لڑائی میں جھونکا گیا ہے،وہ بےبس ہے کہ کچھ کر نہیں پاتا۔ ہم کمنٹس اور تنقید کو ہمیشہ خوش آمدید کہتے ہیں۔ آسمان تلے سیکس ہونا عین ممکن ہے اور دن کی روشنی میں ہونا بھی عین ممکن ہے۔ اس کا عملی ثبوت انٹرنیٹ بھی دیسی ویڈیوز میں بھی مل جاتا ہے۔ بات ہے موقع کی، کسی کو مل گیا کسی کو نہیں۔ میں نے پہلے بھی ذکر کیا یاسر نے تو نہر یا کھیتوں یا باغوں میں بھی خرمستیاں کی ہیں۔ دیکھیں کھلے آسمان سے خوف نہیں ہوتا، خوف ہوتا ہے کہ کسی کے دیکھ لینے کا۔ اگر کسی کو کسی کے آنے کا خوف نہیں ہے اور مکمل تسلی ہے تو بھلے کوئی سڑک پہ کر لے۔ہمارے یہاں سڑکوں کے کنارے تک ہو جاتا ہے،کبھی بچ گئے تو کبھی دھرے گئے۔ اس صورتحال میں دیکھیں، یاسر کوئی غیر نہیں، اس سے عظمیٰ کا ملنا کوئی انوکھی بات نہیں،اس کے ساتھ کہیں پایا جانا الگ نہیں ہے،چار دیواری ہے، بالن کی اوٹ ہے، رات کی تاریکی ہے اور سب گھر والے سوئے ہوئے ہیں تو اب اس صورتحال میں کیا سیکس ہونا مشکل ہے۔
  11. ہر بندے کے حالات جدا ہوتے ہیں۔ کوئی گھر بیٹھے موج منا رہا ہوتا ہے تو کوئی جی جان سے کوشش کے باوجود سوکھا گھوم رہا ہوتا ہے۔ کیونکہ دونوںکا سب کچھ یکساں ہونے کے باوجود بھی کچھ جدا ہوتا ہے۔ یہ بات بھی اہم ہوتی ہے جو نڈر ہوتا ہے اور رسک لے لیتا ہے وہ کچھ پا لیتا ہے اور جو ذرا حوصلہ کم کرتا ہے وہ کچھ پیچھے رہ جاتا ہے؟ پھر ایک کام کر کر کے اس کی جرات اور ہمت بڑھتی بھی جاتی ہے۔ اس مذکورہ کہانی میں یاسر نے جب یکے بعد دیگرے ایک گھر کی ہر عورت کی لے لی تو اس کی جرات تو آسمانوں پہ ہوگی۔ ویسے بھی آپ اگلی قسط سے انجان ہوتے ہیں تو اندازہ نہیں ہو پاتا کہ دراصل اس واقعے کا مقصد کیا تھا یا یہ کیا رنگ لائے گا؟ اس صورتحال میں ایک پوائنٹ یہ بھی تھا کہ یاسر کو اپنے ذہنی سکون کے لیے صرف وقتی تسکین چاہیے تھی،اس اشتعال میں مشت زنی سے بہتر عظمیٰ یا کوئی بھی اس گھر کی عورت تھی۔
  12. گاؤں کا ماحول ہر جگہ کا جدا ہوتا ہے اور کیس بھی الگ ہوتا ہے. اگر کتے بھی ہوتے تو یاسر سے تو مانوس ہوتے کیونکہ وہ اس گھر کا فرد ہے. مرد تو اس گھر میں ازل سے موجود ہے مگر اس کی موجودگی کا کیا فائدہ کہ اس کی ایک ایک عورت یاسر سے پٹ گئی وہ مرد تو بس کولہو کا بیل ہی ہوا .کام کیا تھکا ہارا سو گیا ویسے بھی دنیا میں لوگ ناک کے نیچے سے گل کھلا جاتے ہیں لڑکیاں گھروں سے نکلے بنا ہی کام کر لیتی ہیں اور اسی کہانی میں بیچ راستے نہر میں سیکس ہوا ہے تو چاردیواری میں رات کی تاریکی بیٹیوں کی موجودگی میں ماں نے اسی گھر میں کروایا ہے, تو اسی گھر میں سب کے سو جانے کے بعد میں ہونا کیا مشکل ہے ؟ دراصل سب کی الگ پسند ہے میرا انداز کہانی میں طولت سے زیادہ کہانی میں پیچ و خم ہوتے ہیں
  13. بھائی ایمانداری سے سوچیں کہ اس گھر کی تمام عورتیں اس کے ساتھ تعلقات استوار کیے ہوئے ہیں اور ان کو اس بات کی خبر بھی ہے. دوم گاؤں میں دیواریں چھوٹی ہوتی ہیں پلانگنا مشکل کام نہیں سوم وہ اس گھر کا بچہ سمجھا جاتا ہے اور بچپن جوانی سے آنا جانا ہے تو ایسا ہونا کیا دشوار ہے
  14. دراصل میرے لیپ ٹاپ کی بیٹری چارج کرنا بند ہو گئی ہے. نئی لی ہے مگر بدلنا بھول گیا ہوں اور گھر چھوٹ گئی ہے تو جب جب بجلی جاتی ہے تو سب بند ہو جاتا ہے. اس وجہ سے آٹو ریکوری اور اصل فائل مرج کی ہے.
  15. New Update کہانی کی اپڈیٹ ابھی دور تھی مگر میں نے یہ صرف قارئین کے کمنٹس کی رفتار اور دلچسپی کو مددنظر رکھ کر کر دی ہے۔ فونٹ کا کلر کیوں تبدیل ہو گیا مجھے معلوم نہیں ہے۔
×
×
  • Create New...