Jump to content
URDU FUN CLUB

Search the Community

Showing results for tags 'pardes'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • ...::: U|Fun Specials Moments Club :::...
    • Ramzan Specials Sections
  • ...::: U|Fun Announcements Club :::...
    • News & ­Announcements
    • Members Introduction
    • Complains & Suggestions
  • ...::: U|Fun General Knowledge Club :::...
    • General Knowledge
    • Cyber Shot (No Nude)
  • ...::: U|Fun Buy and Sale Club :::...
    • Buy & Sale Your Products
  • ...::: U|Fun Digital Library & Books Club :::...
    • Digital Library Books & Novels
    • Children Library Books & Novels
    • Own Writers Urdu Novels
    • Social New Writers Club
    • Urdu Poetry Ghazals Poems
  • ...::: U|Fun Adult Multimedia Club [Strictly For 18+] :::...
    • Users Chit Chat + (18)
    • Sex Advice with Doctors
    • Urdu Sexy Jokes Poetry
  • ...::: U|Fun Premium Membership Subscribe Club :::...
    • VIP Membership Features
    • Purchase VIP Membership
    • Premium VIP Sections Demo's
  • ...::: U|Fun Urdu Inpage & Pic Stories in PDF Club High Standard :::...
    • Urdu Picture Stories in PDF
    • Urdu Inpage Stories in PDF
  • ...::: U|Fun Recycle Bin Club :::...
    • Recycle Bin

Categories

  • Urdu Pic Stories High Standard
  • Urdu Sex Stories High Standard

Product Groups

  • Golden Points Packages
  • Community Rank Packages
  • Free Files Bandwidth Packages
  • Paid Files Downloads Packages

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Found 2 results

  1. * ایک نوجوان کی کہانی جوگاوں سے شہر پڑھنے آیا تھا *
  2. پچھلے دنوں قصور کے واقعے کا بہت چرچا رہا کہ قصور کے ایک گاؤں میں 8 تا 14 سال کے لڑکوں سے زیادتی کرنے والا کوئی گینگ تھا جس نے سینکڑوں کی تعداد میں کم عمر لڑکوں سے جنسی زیادتیاں کیں، ویڈیوز بنائیں، بلیک میل کیا اور شاید ہی گاؤں کا کوئی بچہ زیادتی سے بچ پایا خبریں اس بات کی بھی تھیں کہ کسی زمین کا جھگڑا تھا، کیسز اور ویڈیوز کی تعداد میں مبالغہ آرائی تھی، کیسز اور ویڈیوز تو ہیں مگرکوئی 30 یا 40 اس بحث سے قطعہ نظر کہ کتنی مبالغہ آرائی اور کس قدر حقیقت تھی - لیکن اس بات سے تو کوئی انکار نہیں کہ 8 سے 14 سال کے کم عمر بچوں میں جنسی بے راہ روی کےرجحانات اور کم عمر لڑکوں سے جنسی زیادتی کے واقعات صرف قصور میں نہیں پورے ملک کے ہر شہر اور گاؤں میں ہیں اس تھریڈ کا مقصد فی زمانہ بڑھتے ہوئے بچوں سے جنسی زیادتی کے واقعات اور بچوں میں بڑھتے سیکس رجحان کے حقائق/وجوہات کے مختلف پہلوؤں کے زیر بحث لانا ہے (نوٹ: اس تھڑیڈ کا مقصد بچوں سے سیکس کو پروموٹ کرنا ہرگز نہیں ہے) ہمارے پاس اس موضوع میں دو ذیلی موضوعات ہوسکتے ہیں ا- بچوں سے جنسی زیادتی اا- بچوں میں سیکس کا رجحان ان دونوں موضوعات پر ہم درج ذیل پہلوؤں کا تجزیہ کریں گے پس منظر، طبقہ، علاقہ، معاشی حالات ، خاندانی سیٹ اپ، والدین کی لاپرواہیاں، خواندگی اور شعور کا اثر، محلوں، مدرسوں اور سکولوں میں واقعات، محلے کے اوباش اور آوارہ لڑکوں کا رول، میڈیا اور انٹر نیٹ کا رول اور مزید یہ کہ اس میں بچوں سے زیادتی کرنے والے گینگ، جرائم پیشہ افراد، بلیک میلنگ اور بچوں کی زندگیوں کو لاحق خطرات، بچوں کے جرائم کی راہ پر پڑنے کے خطرات ان پہلوؤں اور نکات پر آپ کا جو بھی تجربہ ہے اسے شئر کیجیے
×