Jump to content
URDU FUN CLUB

Recommended Posts

نئے سال کے موقع پر ایک یادگار تحفہ اردوفن کلب کے قارئین کے لیے۔


 


یہ یادگار تحریر اکتیس دسمبر کو قارئین کے لیے شائع کی جائے گی۔


 


Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

  • Like 10

Share this post


Link to post
Share on other sites

تھینکس ڈاکٹر صاحب ۔۔۔آپ کی طرف سے مجھے کہانی مل چکی ہے۔اسے نیو ایئر پر پوسٹ کر دیا جائے گا۔


سب ممبرز سے ایک سوال؟


کیا اسے صرف وی آئی پی ممبرز کے لیئے پوسٹ ہونا چاہیئے ۔یا فری ممبرز کے لیئے بھی اس کہانی کو آن کیا جائے ؟


اپنے جواب اسی تھریڈ میں پوسٹ کریں۔ فیصلہ اکثریت ووٹ سے کیا جائے گا۔


  • Like 4

Share this post


Link to post
Share on other sites

میرا خیال ھے فری ممبرز کے لیے بھی آن کیا جانا چائیے 

کیوں نکےقافی عرصے سے وھاں کوئی کھانی پوسٹ نھی ھوئی

باقی آپ بھتر جانتے ھیں

  • Like 4

Share this post


Link to post
Share on other sites

اس کہانی کو صرف پیڈ ممبرز کے لئے ہونا چاہے۔ہاں البتہ اس کی جھلکیاں فری ممبرز کے لئے بھی ہونا چاہے تاکہ فری ممبرز بھی پیڈ ممبرز بننے کے لئے رغبت حاصل کریں

  • Like 6

Share this post


Link to post
Share on other sites

اگرچہ مجھے اس کہانی پر کمنٹس کرنے میں بہت دیر ہوچکی ہے مگر وہ کہتے ہیں نہ کہ دیر آئد درست آئد۔  یہ کہانی معاشرے کی سچائیوں کی عکاس ہے ہم دوسروں کی بہن بیٹیوں یا بیٹوں کے ساتھ اپنے لمحات رنگین کرتے وقت نجانے یہ کیوں بھول جاتے ہیں کہ ہمارےگھر بھی شیشوں کے ہیں نجانے کب کوئی پتھر ہمارے گھر پر بھی آ گرے شائد عین اسی وقت جب ہم کسی کے گھر پتھر پھینک رہے ہوں۔

  • Like 1

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

×