Jump to content
URDU FUN CLUB
Administrator

٭٭٭٭اے نئے سال٭٭٭٭

Recommended Posts

٭٭٭٭اے نئے سال٭٭٭٭


اے نئے سال بتا تجھ میں نیا پن کیا ہے
ہر طرف خلق نے کیوں شور مچا رکھا ہے
روشنی دن کی وہی،تاروں بھری رات وہی
آج ہم کونظر آتی ہے ہر اک بات وہی
آسماں بدلا ہے افسوسں نہ بدلی ہے زمیں 
ایک ہندسے کا بدلنا کائی جدت تو نہیں 
اگلے برس کی طرح ہونگے کرینے ترے
کسے معلوم نہیں بارہ مہنیے ترے
جنوری، فروری اور مارچ میں پڑے گی سردی
اور اپریل ،مئی جون میں ہوگی گرمی
ہر انسان دہر میں کچھ کھوئےگا کچھ پائےگا
اپنی میعاد ختم کرکے چلا جائے گا
تو نیا ہے تو دکھلا صبح نئی، شام نئی
ورنہ ان آنکھوں نے دیکھے ہیں نئے سال کئ
بے سبب دیتے ہیں کیوں لوگ مبارکبادیں 
غالباُ بھول گئے ہیں وقت کی کڑوی یادیں
تیری آمد سے گھٹے عمر جہاں میں سب کی
فیض نے لکھی ہے یہ نظم نرالے ڈھب سے


٭٭٭فیض احمد فیض٭٭٭

  • Like 4

Share this post


Link to post
Share on other sites

نتیجہ پھر وہی ہوگا، سنا ہے چال بدلے گا
پرندے پھر وہی ہوں گے، شکاری جال بدلے گا

بدلنے ہیں تو دن بدلو، بدلتے   ہو تو ہندسے ہی
مہینے پھر وہی ہوں گے، بیچارہ سال بدلے گا

چلوں ہم مان لیتے ہیں، یہ جیون سالہا سالوں کا
بتاؤ کتنے سالوں میں، ہمارا حال بدلے گا

وہی حاکم وہی قاتل وہی غاصب وہی غربت
نہ جانے کتنے سالوں میں ہمارا حال بدلے گا

سنا ہے سال بدلے گا
 

  • Like 3

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

×