Jump to content
URDU FUN CLUB

Recommended Posts

 

 

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

 

یہ کہانی نوشین کی ہے جو ایک اچھی سلجھی ہوئی لڑکی تھی۔ جب وہ یونیورسٹی گئی تو اس کی سہیلی نے اس کو بگاڑا۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

تمام ممبرز فورم پر موجود ایڈز پر ضرور کلک کریں تاکہ فورم کو گوگل کی طرف سے کچھ اررننگ حاصل ہو سکے۔ آپ کا ایک کلک روزانہ فورم کے لیئے کافی ہے

کہانی کا آغاز کافی اچھا تھا۔۔۔

ہلکی سی کمی محسوس ہورہی ہے دوبارہ سے کہانی پڑھ کر بتا دوں گا 

میرے خیال میں ڈاکٹر خان میرے بتانے سے پہلے ہی آپ کو بتا دیں گے

نئے سلسلے کو شروع کرنے پر میں ایک مرتبہ پھر آپ کا شکرگزار ہوں۔۔۔

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

بہت خوب

اچھا آغاز ہے ۔ میرے خیال میں لڑکیوں سے اسی انداز میں بات چیت شروع کی جاتی ہے

اور لڑکیوں کے افیئرز کا آغاز بھی اسی طرح ہوتا ہے شاید ۔ فون رابطے کا سب سے آسان ذریعہ ہے

لڑکے تو تلاش میں رہتے ہی ہیں کہ کوئی لڑکی لائن دے

اسی لیے ہر لڑکی کو رانگ نمبرز سے کالز ضرور آتی ہیں یہ لڑکی پر منحصر ہے کہ سلسلہ شروع کرتی ہے یا نہیں

اور لڑکی بھی شروع میں جھجھکتی ہے لیکن کوئی نہ کوئی دوست اسے اکسا کر اس راستے پر لے کر آتی ہے کہ کیا ہوا جو تھوڑی سی بات چیت کرلی۔ کیا ہوا جو تھوڑا مستی کرلی

ایک فون ہی تو کیا ہے کونسی قیامت آگئی

پھر بات آگے بڑھتی ہے اور کہاں ختم ہو یہ کہا نہیں جاسکتا

مجھے اس کہانی میں کچھ لکھنے کے اسلوب میں بھی بہتری محسوس ہوئی ہے

میرا مشورہ ہے کہ اردو لکھ رہی ہیں تو انگلش کے الفاظ سے احتراز ہی کریں جب لن اور پھدی جیسے الفاظ استعمال کرہی لیے ہیں تو باقی بھی اردو کے الفاظ استعمال کریں

جیسے گرلز کی جگہ لڑکیاں لکھیں، بوائیز کی جگہ لڑکے ہی لکھیں

اسی طرح فک کیا ہے کچھ بہتر محسوس نہیں ہوتا چلیے چدنا یا چدوانا نہیں لکھنا چاہتیں تو یوں لکھیں

کہ لڑکے نے لڑکی کی لی ہے یا لڑکی نے کیوں کو دی ہے

بہرحال بہت اچھی کاوش ہے اور اس کہانی کا آغاز بہت فطری طرز کا ہے ۔ حقیقی زندگی سے قریب تر

Share this post


Link to post
Share on other sites

Please login or register to see this quote.

وہ لفظ میں نے نہیں لکھے ہیں۔

مجھ سے لکھے ہی نہیں جاتے تھے۔ ڈاکٹر صاحب نے مشورہ دیا کہ جو لکھنا ہے لکھ لو۔ آخر میں سارے ٹیکسٹ کو سلیکٹ آل کر کے ڈک کو لن سے ری پلیس کر دو۔ خود بخود لفظ بدل جائے گا اور لکھنا بھی نہیں پڑے گا۔ اسی وجہ سے وہ لفظ آپ کو نظر آتے ہیں جو میں نے لاسٹ میں ری پلیس کیے   ہوتے ہیں۔ :)) 

میں جیسا آپ نے بتایا ویسا ہی لکھنے کی کوشش کروں گی۔مشورے کا بہت شکریہ۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

good idea

story almost real feel ho rahi ha

aik larki doosri larki ko aisay he kharab karti ha

ya apni line pe laati ha

so wo apna kam khul k kar sakay

aur larkay b yehi tareeka use kartay larki patanay ka

sub ko pata b ha lekan phr b setting ho jati ha

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

Please login or register to see this quote.

آپ کے کمنٹ کا بہت شکریہ۔

آپ نے ٹھیک بولا کہ سب کو پتا ہوتا ہے کہ لڑکا اس کو پٹا رہا ہے۔ لڑکی بھی سمجھتی ہے کہ یہ کس طرف جا رہا ہے بس وہ بھی خود پٹنا چاہتی ہے بس تھوڑا جان بوجھ کر ٹائم لیتی ہے تاکہ وہ اس کو غلط نہ سمجھ لے۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

کہانی کی نئی اپڈیٹ لکھ کر لوڈ کر رہی ہوں۔

پلیز مجھے کمنٹس دے کر بتانا کہ کیسی ہے؟؟؟

میں نے بہت محنت سے لکھی ہے۔

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

Please login or register to see this attachment.

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

ZABARDAST

kahani achi tara agay ja rahi ha

aur thora thora hot hona b start ho gai ha

typical couple and a well know procedure

pehli date main yehi kuch hota ha

kiss he har cheez ka start hota ha

aur aaj main b chiniot bazar gea tha

lekan muje to kahin nazar nai aye????????????

Share this post


Link to post
Share on other sites

مطلب آپ کی بھی خواہش ہے کہ کسی لڑکی کو دھوکہ دے کر سیکس کریں؟؟؟؟؟

کیونکہ اس کہانی میں تو فیضان نوشین کو بس سیکس کے لیے پٹا رہا ہے۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

Please login or register to see this quote.

sirf milnay ki khawhish ha

aur Faizan akela he dhoka nai de raha

Nosheen b aik kisam ka dhoka de rahi ha

khud ko b aur Faizan ko b

maqsad sirf maza ha dono ka

Share this post


Link to post
Share on other sites

جی ہاں نوشین بھی دھوکہ دے رہی ہے خود کو کہ بس میں زیادہ آگے نہیں جاؤں گی۔ بس مسیج تک یا بس فون تک۔ مگر اب کس تک ہو گئی۔

یہی تو کہانی میں میں بتانا چاہ رہی ہوں کہ اگر ایک بار مسیج کا جواب دے دیا تو سمجھ لو سب ہاتھ سے نکل گیا۔

پھر سچویشن کنٹرول نہیں ہوتی۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

×