Jump to content
You are a guest user Click to join the site
URDU FUN CLUB
waji

پہلی چودائی

Recommended Posts

اسلام وعلیکم 

میرا نام وجدان ہے اور سب دوست مجھے پیار سے وجی کہتے ھیں

یہ ان دنوں کی بات ھے جب میں 9کلاس میں پڑھتا تھا اور دوستوں کے ساتھ نئ نئ بلیو مویز دیکھنی شروع کر دی تھی اپنے بارے میں بتاتا چلو مویز کے ساتھ سیکسی کھانیاں بھی سکول سے واپسی پر پرچھپ کے خرید کے پڑہنے لگا تھا اور میرا شوق چودائ کی طرف اور اپنے لن کی طرف بڑھنے لگا تھا اسی مقصد کے لیے ھندو پنڈت کی کتاب کوک شاستر خرید لی اور لن کی لمبائی اور موٹائی بڑھانے کے ساتھ اپنا چودائ کا ٹائم پر محنت کرنے لگا 

اس دوران ہمارے محلے میں نئ فیملی شفٹ ہو ئ اس فیملی میں 2 بھن اور 2 بھائی تھے ایک بھائی انگلینڈ ہوتا تھا اور ایک میرا ھم عمر اس کا نام علی تھا 

کرکٹ اور سیکس کے ساتھ دیوانگی بچپن سے تھی ہماری تو اس کرکٹ کی وجہ سےبھائ سے دوستی بھی ھوگئ

علی کی بہنیں اس سے بڑی تھی تو ان کو آپی میں بھی کہا کرتا تھا اکژ ہوم ورک اور کچھ سمجھنے کے بہانے ان کے گھر آنا جانا شروع ہوگیا تھا 

علی کی اوپر کی بہن کا نا م بینا تھا اس سے کافی دوستی ہوگی تھی اکژ ان سے ہی میں مدد لیا کرتا تھا

انکی شادی کے معملات پھنسے ھوے تھے کیونکہ ان سے اوپر ایک بھن نازین بھی تھی لوگ اتے تھے ان کو دیکھنے مگر پسند کر کے نہیں جاتے تھے ایسا نہیں تھا کہ وہ رونوں بہنیں خوبصورت نہیں تھی مگر کرایہ کا مکان اور انکی مالی حالت اگر نازک نہیں تھی تو اتنی تگڑی بھی نہیں تھی اسی وجہ سے لوگ اندازہ لگا لیا کرتے تھے کہ ان سے کچھ خاص ملنا نہیں اور اسی وجہ سے دونوں بہنوں کی عمر نکلی جا رہی تھی بڑا بھائی فیصل انگلینڈ میں ھونے کے باوجود کچھ خاص کماتا نہیں تھا

میری چونکہ بینا سے دوستی ہوگئی تھی جو کہ مجھ سے عمر میں 8 سال بڑی تھی ہوم ورک کے بھانے ان کے گھر آنا جانا شروع تو کیا ھوا تھا ان کے سا تھ والے گھر میں ایک لڑکی انعم کے سا تھ کھانی چل پڑی تھی بینا کو کبھی گندی نظر سے نہیں دیکھا تھا لیکن بینا کے گھر سے انعم کی چھت پر جا نا کوئی مشکل کام نہیں ھوتا تھا تو بس اچھی چل رھی تھی میں انعم کی پھدی مارنے کے چکر میں تھا اور اس با ت کا اندازہ انعم کو تھا انعم کو عام لڑکی نہیں تھی اسکا  فگر اپنی اوئل عمری میں بھی قیامت تھا سینے پر مموں کی گولائی اور کمر کے نیچے گانڈپر گوشت کی مناسبت مقدار تھی جسکو میں چومنے کے بھانے میں ناپ چکا تھا

انعم کا گھرانہ مذہبی تھا اور وہ باغیانہ خیالات والی لڑکی تھی چونکہ علی جانتا تھا میری اور انعم کے بارے میں تو وہ کافی مدد کیا کرتا تھا انعم کے ساتھ باتیں علی کی چھت پر ہوا کرتی تھی اور آہستہ آہستہ انکا موزوع سیکس پر انے لگ گیا تھا

انعم کو میں بلیو فلم تو نہیں لا کے دے سکا لیکن سیکسی کھانیوں کے رسا لہ دیا کرتا تھا اور اس دوران انعم کو اس کے چھت والے کمرے میں چوم لیا کرتا

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

اردو فن کلب کے پریمیم ممبرز کے لیئے ایک لاجواب تصاویری کہانی ۔۔۔۔۔ایک ہینڈسم اور خوبصورت لڑکے کی کہانی۔۔۔۔۔جو کالج کی ہر حسین لڑکی سے اپنی  ہوس  کے لیئے دوستی کرنے میں ماہر تھا  ۔۔۔۔۔کالج گرلز  چاہ کر بھی اس سےنہیں بچ پاتی تھیں۔۔۔۔۔اپنی ہوس کے بعد وہ ان لڑکیوں کی سیکس سٹوری لکھتا اور کالج میں ٖفخریہ پھیلا دیتا ۔۔۔۔کیوں ؟  ۔۔۔۔۔اسی عادت کی وجہ سے سب اس سے دور بھاگتی تھیں۔۔۔۔۔ سینکڑوں صفحات پر مشتمل ڈاکٹر فیصل خان کی اب تک لکھی گئی تمام تصاویری کہانیوں میں سب سے طویل کہانی ۔۔۔۔۔کامران اور ہیڈ مسٹریس۔۔۔اردو فن کلب کے پریمیم کلب میں شامل کر دی گئی ہے۔

Bht acha start lia h story ka ap ny plz isko continue rkhy ga

Share this post


Link to post
Share on other sites
10 hours ago, Raja jaan said:

Bht acha start lia h story ka ap ny plz isko continue rkhy ga

حوصلہ افزائی کا بہت شکریہ اس کو لازمی آگے چلاو گا روزانہ کی بنیاد پر اپڈیٹ کر وگا

آپکی حوصلہ افزائی کا انتظار رہے گا 

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

ایک بار ایسا ہوا کہ چونکہ علی میرا رازدار تھا میں جب انعم سے ملنے جاتا تو وہ پیچھے دھیان رکھتا تھا

انعم سے ملنے میں چھت پر چڑھ کر ان کی طرف اتر گیا وہ چھت والے کمرے میں میرا انتظار کر رہی تھی 

مجھے دیکھتے ہی میرے گلے لگ گئی میں نے بھی اسے چوم لیا اسکے ھونٹوں کو اسکا چہرہ کو ھاتوں سے تھام کر اوپر کیا 

انعم بولی

کیا بات ہے آج آتے ہی شروع ہو گیے ھوں

میں نے جواب دیا 

جب حسن سامنے ہو تو پروانہ کو جلنے میں دیر نہیں کرنی چاہیے 

انعم کے جواب کا انتظار کیے بغیر اس کے ہونٹوں کو چوسنے لگا اور اسکے مموں کو ھاتھوں سے نامپ رھا تھا 32 سایزکے ممے میرے ہاتھوں سے مسلے جا رہاے تھے اب اسکا جسم آہستہ آہستہ پگھلنے لگا تھا میرا لن جو کہ ان سر اٹھا رہاتھا اب وہ اسکی چوت سے ٹکرا رہاتھا انعم نے میرے لن کی سختیگی کو محسوس کر لیا تھا اس لیے وہ بھی اپنی پھدی میرے لن پر رگڑرھی تھی اسکے ہونٹوں کو چھوڑ کر اب میں اسکی گردن اور کان کی لو کو چو م اور چوسنے لگا

انعم جلدی کرو گھر میں آج کوئی بھی نہیں ہے کوی آنہ جاے

یہ سنتے ہی مجھے انعم کی کنواری پھدی اپنی آنکھوں کے سامنے نظر آنے لگی مگر میں جانتا تھا کہ وہ اتنی آسانی سے پھدی میں میرا لن نہیں لے گی نا ہی وہ ابتک میرے لن کو دیکھ سکی تھی

کدھر گیے ھیں گھر والے اور یہ بولتے ھوے اپنے لن کی ٹوپی کو اسکی پھدی کے لبوں پر دبا دیا 

انعم.. سسس آہ... وجی آرام سے آہ مار ڈالو گے کیا... ابو امی کو لیکر خالہ کے گھر گی ہیں.... اسکی قمیض پیٹ سے اوپر کرچکا تھا اور اب اسکا شفاف سپاٹ پیٹ میرے سامنے تھا لمحہ ضائع کیے بغیر میں نے اسکی بند ناف کو چوم لیا... آہ اب وہ میرے بالوں میں انگلیاں پھیرنے لگی... انعم مجھ سے ایک سال چھوٹی تھی مگر اسکے جسم کی اٹھان کچھ اور کہانی کہ رہی تھی.... اب جب ناف کو چوم کر میں نے قمیض اوپر کرنا چاہیے تو اس نے مجھے روک دیا لیکن میں نے بھی ہار نہیں مانی چونکہ میرا لن اب تن کر لنڈ بن چکا تھا اور وہ اب اسکی پھدی کو مسلسل دبا رھا تھا.... انعم اب نیچے لیٹی تڑپ رہی تھی.... آہ.... وجی... رک جاو نہ بس کرو.... آہ... بہت سخت ہے تمہارا تو تھوڑا اٹھو نہ.. آہ... مجھے چب رہا ہے نیچھے آہ... میں نے یہ سنتے لن کا دباو اور بڑھا دیا اور اسکے باذوں اوپر کر دیے.... اب مموں تک قمیض اوپر اوٹھا دی برا میں قید مموں کو دیکھ کر لنڈ کو اس انداز نیچے سے اوپر پھیرا کہ لن کی موٹائی اور لمبائی سے چوت کی نرمی کو آشنا کر سکو... انعم اب اس لن کے مساگ کے سہ نہ سکی اور اسکا جسم کمان کی طرح مڑ گیا.... اور ایک لمبی سسسکاری بھری.... آہ.. اسی لمحے میں میں نے مموں کو برا سے باہر نکال دیا اور انہوں کو منہ میں لیکر چوسنے لگا اس حملہ کو وہ برداشت نہ کر سکی اب وہ ساری مزاحمت ختم کر چکی تھی اب اس کے ھاتھ میری کمر اور بالوں میں سہلانے لگی وجی.... آج کیا کر دیا ہے تم. نے اف..... مار ڈالو گے کیا... میں نے کوئی جواب نہیں دیا اور نپلوں کے راونڈ زبان کی نوک پہیرنے لگا... اور ساتھ میں دوسرا ممہ کو دبانے اور مسلنے لگا... اب میں نے پیش قدمی کا فیصلہ کیا اور شلوار کی لاسٹک میں انگلیاں پہنسا لی... نپل میرے منہ میں تھا جسے میں چوس رھا تھا... 

شلوار کی لاسٹک میں انگلیاں پھنسا لی تھی مگر میں جانتا تھا کہ یہ لمحہ بہت اھم تھا میں انعم کو اتنا پاگل کر دینا چاہتا تھا کہ وہ مجھے روک نہ سکے کیونکہ مجھے خود اسکے کنوارے جسم کا نشہ ہو رھا تھا شلوار اتررنے کے لیے میں نے ایک با پھر اپنے لنڈ کو اسکی نازک پھدی کے لبوں پر مسلا اور اپنی موٹی ٹوپی پھدی کے دانہ پر رگڑتے ہوے منہ سے باہر نہ نکالا اور نپلوں پر جنونی انداز سے چوسنے اور چومنے لگا

جس سے انعم نے کمر اٹھا کر میرے لنڈ کو پھدی کی رگڑ کا مزہ لیا اور اسی ایک لمحہ میں میں شلوار نیچے اتار دی... وہ جیسے اچانک ہوش میں آئی.... وجی روک جاؤ شلوار تو اوپر کرو... مجھے ننگا نہیں ہونا اس روشنی میں کوئی دیکھ نہ لے ہٹو اوپر سے... انعم میں کچھ نہیں کر رہا ہو بس اپنی جان کو پیا ر کر رہا ہو کسی نے نہیں دیکھنا دروازہ بھی بند ھے اور گھر میں بھی کو ئ نہیں.... تم پریشان مت ہو... وجی تمہارے ساتھ ہے... اسکا سفید گوری ملائم ٹانگیں اور پیٹ مجھے بہت اچھے لگے اور اب میں نے دونوں. مموں کو مسلتے ہوے اسکی ناف اور زیر ناف پیٹ کو چومنے لگا... انعم.. سسس آہ.. اف کیا جا دو ہے تمہارے چومنے میں میری جان اب وہ میرا سر اپنی پھدی کی طرف دیکھلنے لگی... میں نے زندگی میں پہلی بار پھدی دیکھی تھی اور کہانیوں میں پڑھا تھا کہ پھدی کو چوسنے سے لڑکی پاگل ہوتی ہے میں نے اس بات کو آزمانے کا فیصلہ کیا اور اپنی زبان کی نوک کو ناف سے بنا بالوں والی پھدی کی طرف لے کے جانے لگا اسکے ہاتھ کے پش کے ساتھ اسکے دونوں مموں کو ابھی بھی میں آہستہ آہستہ دبا اور سہلا رہا تھا... اسکی پھدی سے بھینی بھینی خوشبو آرہی تھی جیسے ہی میری زبان اسکی پھدی کے لبوں پر پہنچی پھدی کے کھٹے نمکین پانی کو میں نے چکھ لیا مجھے ایسا لگا جیسا اس کلی جیسی پھدی کا رس مجھے امر کر دے گا ادھر جیسے ہی پھدی کا پانی اور لب زبان سے لگے انعم نے آہ کرتے ھوے اپنی ٹانگوں کو کھول لیا... اف وجی... آہ مت کرو نہ آہ مجھے کچھ ہو رھا ہے... میں نے کوئی جواب دیے بغیر اسکے نپلوں کو مموں میں دبایا... اور زبان کلی جیسی پھدی میں گھسا دی... زبان کی نوک پھدی کے سوراخ میں گھسی تو انعم نے میرا سر پکڑ کے اور اندر کو پش کرنا چاہا مگر میں اسے اتنی آسانی سے فارغ نہیں ہونے دینا چاہتا تھا سو میں وہی روک گیا اور سوراخ کے بلکل اوپر اپنی زبان کو اوپر نیچے کرنے لگا.... اور انعم کے منہ سے بلند-آواز نکلی آہ........ اف اللہ... ھاے... وجی..... کیا کر رھے ھو یہ گناہ ہے... وہ مجھے اپنی پھدی پر دبا بھی رھی تھی اور منہ سے منع بھی کر رہی تھی... اسی دوران میرا لنڈ پھٹنے والا ہوچکا تھا... میں نے شورٹس سے لنڈ اپنا باھر نکال لیا.... اب  میری زبان نے پھدی کے لبوں کے اندر سے سہلانا شروع کیا نیچے سے اوپر تک جیسے لنڈ پھیر رھا تھا اب انعم اپنی آنکھیں بند کر کے وہ پھدی میں زبان سے چسوانے کا مزہ لے رھی تھی.. اور اسکے جسم پر اپنی ھاتھوں سے مساگ کر رھا تھا... اپنے ھاتھوں سے کبھی مموں اور کبھی پیٹ کبھی گردن پر پھیرنے لگا... اور میری زبان نے اسکی پھدی میں ادھم مچا رکھا تھا.. اسکی پھدی پانی رس رس کر بہ رھا تھا اور میری بھی برداشت ختم ہو رہی تھی.... میں اوپر اٹھا اب اسکے رانوں اور ناف کے سوراخ پر زبان لگائی... انعم نے آنکھیں کھولی اور مجھے دیکھنے لگی اسکی آنکھوں میں فطری شرم و حیا آئی... اور اس نے اپنی آنکھوں کو پھیر لیا... 

Share this post


Link to post
Share on other sites

بہت شاندار اپڈیٹ  وجی 

امید ہے چھوٹی سہی مگر تواتر سے اپڈیٹس آتی رہیں گی 

 

 

Share this post


Link to post
Share on other sites
23 hours ago, Jutt ch said:

Nice start bro keep rocking

بہت شکریہ تعریف کا اپ سب کی حوصلہ افزائی کی وجہ سے میرے اندر کہانی لکھنے کا ارادہ بنا

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

×
×
  • Create New...