Jump to content
URDU FUN CLUB
Sign in to follow this  
Play_Boy007

صحرا میں زیر تعمیر جدید ترین شہر

Recommended Posts

صحرا میں زیر تعمیر جدید ترین شہر

دنیا کا پہلا کاربن فری شہر ‘‘مصدر‘‘ ابوظہبی میں زیر تعمیر ہے جس میں توانائی کا واحد وسلیہ سورج کی روشنی ہو گی۔

Please login or register to see this image.

شہر میں نہ دھواں ہوگا نہ ردی اور نہ گاڑیاں

اس شہر میں نہ گاڑیاں نظر آئیں گی اور نہ ہی بلند و بالا عمارتیں۔ ابوظہبی کو انٹرنیشنل رینیوایبل انرجی ایجنسی (IRENA) کے سکریٹریٹ کی رہائش کے انتظام کے لئے منتخب کیا گيا ہے۔

اور یہ پہلا موقع ہے جب کسی عالمی تنظیم نے مشرق وسطی کے کسی شہر کو اپنے صدر دفتر کے لئے منتخب کیا ہے۔

کاربن فری ‘‘مصدر ‘‘ شہر مکمل طور پر قابل تجدید توانائی سے اپنی ضروریات پوری کر کے دنیا کا صرف پہلا کاربن فری شہر ہی نہیں بنے گا بلکہ یہاں عام شہروں کی طرح ‘‘ردی‘‘ کا نام و نشان نہیں ہو گا کیونکہ ہر قسم کی ردی کو ری سائیکل کر کے دوبارہ قابل استعمال بنایا جائے گا اور اس طرح یہ دنیا کے لیئے ایک مثالی شہر ثابت ہو گا۔

ایک چار دیواری کے اندر تعمیر ہونے والے اس شہر کو قدیم عرب شہر کی طرز پر تعمیر کیا جارہا ہے جہاں تنگ گلیاں عمارتوں کے سائے کی وجہ سے بھی ٹھنڈی رہیں گی اور اسی طرح پورے شہر میں ٹھنڈک کے احساس کے لیئے ‘‘لونر ٹیکنالوجی‘‘ استعمال کی جائے گی۔

kdn8n6.png

شمسی توانائی کا سٹیشن جو مصدر شہر میں توانائی کا واحد ذریعہ ہوگا

پٹرول اور ڈیزل کی روایتی گاڑیاں صرف شہر کے صدر دروازے سے باہر تک محدود رہیں گی جس کے بعد یا تو پیدل سفر کیا جاسکے گا یا پھر ڈرائیور کے بغیر چلنے والی مقناطیسی گاڑیاں استعمال کی جاسکیں گی۔ بازاروں اور گلیوں میں پیدل سفر کیا جائے گا لیکن تھکاوٹ کی صورت میں نچلی منزل سے ڈرائیور کے بغیر چلنے والی مقناطیسی سینسر کی حامل گاڑیاں استعمال کی جاسکتی ہیں جو شمسی توانائی سے چلیں گی

اس زیر تعمیر کاربن فری شہر کا ڈیزائن برطانوی آرکیٹیک فوسٹر اینڈ پارٹنرز نے تیار کیا ہے اور اس پر پندرہ بلین سے تیس بلین ڈالر کے درمیان لاگت آئے گی ۔ یہ رقم ابوظہبی کے حکمران شیخ خلیفہ بن زائد النیہان ادا کریں گے۔ مکمل ہونے پر اس شہر میں پچاس ہزار افراد قیام کر سکیں گے جبکہ ایک یونیورسٹی اور ایک ہزار تجارتی ادارے ہوں گے۔

تعمیراتی ٹیکنالوجی میں روایتی صحرائی اور اکیسویں صدی کی انجینیرنگ ٹیکنالوجی کا مشترکہ استعمال کیا جا رہا ہے اور قابل تجدید توانائی کے لیئے صحرامیں چمکتے ہوئے سورج کی حدت کو استعمال میں لایا جائے گا اور اس طرح‘‘مصدر ‘‘شہر آج کی دنیا میں مکمل طور پر قابل تجدید توانائی کے ذرائع سے پاور حاصل کرکے دنیا کا سب سے پہلا صفر کاربن شہر ہی نہیں بلکہ ڈیزائن میں نئی طرز کی ٹیکنالوجی کی ترقی اور تجارتی اعتبار سے کثیر جہت سرمایہ کاری کا مرکز بنے گا ۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now
Sign in to follow this  

×