Jump to content
URDU FUN CLUB
Sign in to follow this  
Sarfarosh

عورتوں میں گانڈمروانے کی عادت مقبول ہونے

Recommended Posts

تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ عورتوں میں گانڈ مروانے کا شوق اس تیزی کے ساتھ مقبول ہورہا ہے کہ 20 سال بعد اورل سیکس کی طرح یہ بھی سیکس کی باقاعدہ ایک منزل بن جائے گااور اس کے بغیر سیکس نامکمل تصور کیا جائے گاتحقیق کاروں کے مطابق اس وقت 25 سے 29 سال عمر کی 45 فی صد عورتوں اور لڑکیوں نے اینل سیکس کا مزہ لیا ہے جبکہ 21 فی صد عورتوں نے چند ماہ پہلے ہی اس کا مزہ لیا ہے رپورٹ کے مطابق اینل سیکس (گانڈ مروانا)کرنے والیوں میں 18 اور 19 سال کی 20 فی صد لڑکیاں شامل ہیں جبکہ 39.9 فی صد کی عمریں 24 سال سے کم ہیں رپورٹ کے مطابق 1992 میں صرف 20.4 فی صد خواتین ایسی تھیں جنہوں نے مرد ساتھی کے ساتھ اینل سیکس کیا تھا 2005 ءمیں یہ تعداد بڑھ کر 32.6 فی صد ہوگئی رپورٹ میں بتایا گیا کہ 20 سال پہلے اورل سیکس (منہ کے ساتھ اپنے ساتھی کے عضو یا جگہ کو چوسنا) بہت کم لوگوں میں مقبول تھا لیکن یہ اس تیزی کے ساتھ مقبول ہوا کہ اگر اس وقت کوئی مرد یا خاتون 29 سال عمر سے بڑا ہے اور اس نے ابھی تک اورل سیکس نہیں کیا تو اس کی زندگی ایسی ہی ہے جیسا کہ اس زمانے میں کوئی شخص موبائل فون کے بغیر رہ رہا ہوں رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اینل سیکس کے مقبول ہونے میں ہم جنس پرستوں کا بھی بڑا ہاتھ ہے عورتیں مردوں کو اپنی جانب متوجہ کرنے کے لئے بھی اینل سیکس کرتی ہیں رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ اینل سیکس اورل کی نسبت زیادہ محفوظ ہے عورتوں کو اس کی طرف توجہ دینی چاہئے رپورٹ میں عورتوں کو تجویز دی گئی ہے کہ وہ کسی مرد ساتھی سے پہلے اکیلے ہی کسی کھلونے کے ساتھ اینل سیکس ٹرائی کریں اور آہستہ آہستہ اس کے لئے خود کو تیار کریں تاکہ کسی مرد ساتھی کے ساتھ کرنے پر ان کو تکلیف نہ ہو بلکہ وہ اس کو انجوائے کریں براہ راست مرد ساتھی کے ساتھ اینل سیکس کرنے سے عورت کے مذکورہ سوراخ کے پٹھے متاثر ہوسکتے ہیں ماہرین طب کا یہ بھی کہنا ہے کہ جو عورتیں اینل سیکس کا شوق رکھتی ہیں ان کو تیل وغیرہ کا خود خیال رکھنا ہوگا اور یہ ایسی قسم کا ہونا چاہئے جو کم از کم اس وقت تک خشک نہ ہو جب تک کہ اینل سیکس مکمل نہیں ہوجاتا ماہرین طب نے کہا ہے کہ اینل سیکس سے حادثاتی حمل کاخطرہ بھی کم ہوجاتا ہے تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ 20 سال بعد اینل سیکس اتنا مقبول ہوجائے گا کہ اس وقت لوگ انجوائے کرنے کے لئے کوئی نیا طریقہ سوچ رہے ہوں گے

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now
Sign in to follow this  

×