Jump to content
URDU FUN CLUB
Sign in to follow this  
lund4phuddies

انتہا ہے برداشت کی!!!!!۔

Recommended Posts

برداشت

دوستوں ایک دفعہ کا ذکر ہے کہ اس پیاری سی دنیا میں ایک ملک ہوا کرتا تھا جس کا نام تھا فاکستان۔ اس ملک پر ایک بھکاری حکومت کیا کرتا تھا ۔اس ملک کے عوام دو بڑے حصوں میں بٹے ہوئے تھے۔ ایک تھا جنوب کا حصہ اور ایک تھا شمال کا حصہ۔ شمالی عوام روٹی روزی کمانے جنوب کا رُخ کرتے تھے اور جنوب کے عوام موج مستی کے لیے شمال کا رُخ کرتے تھے۔ کیوں کہ جنوبی علاقوں میں روزگار زیادہ تھا اور شمالی علاقوں میں حُسن۔ اس طرح دونوں جانب کے عوام کی گذر اوقات اچھے طریقے سے ہو جاتی تھی۔ دونوں جانب کے عوام کو ایک پل پر سے گذرنا پڑتا تھا جو ایک بہت بڑے دریا پر بندھا ہوا تھا۔

ایک دفعہ اس بھکاری کے من میں آیا کہ اس ملک کے عوام کا صبر آزمایا جائے اس لیے اس نے اپنے وزیرِ با تدبیر کو ٹاسک دیا کہ ہر ممکن طریقہ سے ہماری رعایا کا صبر آزما کے دکھاؤ۔ وزیر ٹھہرا للّو رام! سو اس نے اپنے طریقہ سے عوامی صبر آزمانے کا عندیہ دیا اور بادشاہ سلامت نے منظور کر لیا۔

اب ہوا کچھ اس طرح کہ وزیر نے پل پر سے گذرنے کے لیے ٹیکس نافذ کر دیا۔ اس اقدام کے خلاف کوئی صدائے احتجاج بلند نہ ہوئی اور لوگ بے چوں چراں ٹیکس ادا کر کے پل پر سے گذرنے لگے۔

وزیر نے ٹیکس بڑھا کر دس گنا کر دیا مگر پھر بھی کوئی احتجاج نہ ہوا۔ اب تو سمجھو یہ کہ لالہ للّو رام کی ہٹ گئی۔ اس نے حکم دیا کہ پل پر سے گذرنے والوں سے دس گنا ٹیکس تو لیا ہی جائے ساتھ ہی ساتھ سب کو فرداً فرداً دس دس جوتے بھی لگائے جائیں۔

اس حکم کے بعد بھی لوگ ٹیکس ادا کر کے اور جوتے کھا کھا کر پل پر سے گذرتے رہے۔ اب ٹائم آگیا تھا کہ للّو رام کی پھٹنے والی تھی۔ اس نے سوچ لیا کہ اگر اس کی تدبیر کار گر نہیں ہوئی تو بھکاری بادشاہ اس کی گانڈ پھاڑ کر رکھ دے گا۔ گانڈ کا خیال آتے ہی للّو رام کے ہونٹوں پہ شیطانی ہنسی آگئی اور وہ قہقہے مار کر ہنسنے لگا اب اس نے حکم صادر کیا کہ جو بھی پل پر سے گذرے گا اسے نہ صرف یہ کہ دس گنا ٹیکس دینے بلکہ دس جوتے کھانے کے بعد اپنی گانڈ بھی مروانی پڑے گی۔ ابھی یہ نیا حکم صادر ہوئے دو ہی دن ہوئے تھے کہ تمام کی تمام عوام بھکاری بادشاہ کے محل کے آگے جمع ہوگئی۔ اتنا بڑا مجمع دیکھ کر بادشاہ سمجھ گیا اب تو احتجاج ہوگا ہی ہوگا۔ وہ بڑی تمکنت سے اپنے محل کی گیلری میں آیا اور بے بس عوام سےمخاطب ہوا ۔

"ابے او بھوسڑی کے بے بس عوام! کاہے کو اتنا شور مچا کے رکھا ہے؟"

عوام کی طرف سے جواب آیا

"جہاں پناہ! مسئلہ یہ ہے کہ آپ نے پل پر گذرنے پر ٹیکس لگایا ! ہم کچھ نہ بولے۔"

"آپ نے ٹیکس دس گنا کردیا پھربھی ہم کچھ نہ بولے!"

"آپ نے ٹیکس ادا کرنے کے ساتھ ساتھ جوتے کھانے کا بھی حکم دیا تب بھی ہم خاموش رہے"

"مگر اب آپ نے گانڈ مروانے کا بھی حکم دے دیا ہے تو۔۔۔۔"

بھکاری بادشاہ نے ان کی بات کاٹتے ہوئے کہا

"تو تم لوگوں کو گانڈ مروانے پہ اعتراض ہے؟"

جواب آیا کہ

"نہیں! ہمیں گانڈ مروانے پر نہیں اعتراض بلکہ اعتراض یہ ہے کہ گانڈ مارنے کے لیے صرف ایک آدمی پل پر تعینات ہے۔ لمبی لائن لگی ہوتی ہے اور کام پر پہنچنے میں دیر ہورہی ہوتی ہے۔ آپ براہِ کرم گانڈ مارنے والوں کی تعداد بڑھائیں تاکہ ہم اپنی اپنی منزلوں پر تاخیر سے پہنچنے سے بچ سکیں!"

واقعی کیا قوم تھی اور کیا بادشاہ تھا۔ جیسی قوم ویسا بادشاہ۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

واہ جانی

کیا منظر کشی کی ہے - اسکو دیکھکر تو مجھے ہندوستان کا پڑوسی ملک یاد آ گیا ہے -

کیونکہ آجکل اُس ملک کا بھی کمُ بیش یہی حال ہے

Share this post


Link to post
Share on other sites

Yar L4P main ny pahly b ye misal suni hui thi magar dear aap ny jis tarha se ye bayan ki hia waqai maza aagaya ye misal pakistan ki awam per puri fit aati hai.... maza agaya dear....... or afsoos b hai k Pakistan main awam phir b nai jagny wali....

Share this post


Link to post
Share on other sites

Please login or register to see this quote.

میری جان کیسے جاگے عوام عوام کا سارا وقت تو اسی فکر میں رہتا ہے کہ بجلی کا بل دینا ہے مکان کا کرایہ دینا ہے بچے کی فیس باپ کی میڈیسن۔۔۔۔ ان کنجروں نے ہمیں ایسے چکر میں ڈال دیا ہے کہ ہم کچھ سوچنے کرنے کے قابل ہی نہیں رہے

Share this post


Link to post
Share on other sites

آپ سب دوستوں کا شکریہ کہ جن کو میرا یہ لطیفہ نما تھریڈ اتنا پسند آیا کہ سب لوگوں کی رگ ظرافت پھڑک اٹھی۔ ویسے آپ سب دوستوں کی پسندیدگی کا میں تہہ دل سے مشکور و ممنون ہوں۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now
Sign in to follow this  

×