Jump to content
URDU FUN CLUB
Sign in to follow this  
Guru Samrat

الیکشن 2013 نتائیج کی کچھ جھلکیاں

Recommended Posts

الیکشن 2013 نتائج کی کچھ جھلکیاں


لاہور (نمائندگان + نوائے وقت رپورٹ) قومی اسمبلی کی 268 سیٹوں کے غیر سرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ (ن) نے 125 پر برتری لی ہوئی تھی جبکہ تحریک انصاف اور پیپلز پارٹی پیچھے تھیں، تحریک انصاف 35 اور پیپلز پارٹی 32 پر سبقت لئے ہوئے تھی۔ الیکشن میں حصہ لینے والے کئی برج الٹ گئے، پرویز اشرف، منظور وٹو، فردوس عاشق، قمر الزمان کائرہ، نذر گوندل، صمصام بخاری، ابرار الحق، امیرمقام، سردار مہتاب عباسی، غلام احمد بلور ہار گئے۔ اے این پی قومی اسمبلی کی کوئی نشست نہ جیت سکی۔ این اے 68 سے نوازشریف نے 78111 ووٹ حاصل کر کے کامیابی حاصل کر لی جبکہ ان کے مخالف تحریک انصاف کے نور حیات کلیار نے 28372 ووٹ حاصل کئے۔ این اے 1 پشاور سے پی ٹی آئی کے عمران خان 66465 ووٹوں کے ساتھ جیت گئے۔ اے این پی کے غلام احمد بلور نے شکست تسلیم کر لی۔ وہ 1427 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 17 ایبٹ آباد سے پی ٹی آئی کے ڈاکٹر محمد اظہر خان 35414 ووٹوں سے آگے تھے جبکہ مسلم لیگ (ن) کے سردار مہتاب عباسی 18802 ووٹوں کے ساتھ دوسری پوزیشن پر تھے۔ این اے 116 نارووال کے 104 پولنگ سٹیشنوں سے ملنے والے نتائج کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے دانیال عزیز 36831 ووٹ لیکر پہلے نمبر پر جبکہ پیپلز پارٹی کے طارق انیس چودھری 14424 ووٹ لیکر دوسرے نمبر تھے۔ این اے 170 وہاڑی 4 مسلم لیگ (ن) کے سعید احمد خان منہیس 58706 ووٹوں کے ساتھ پہلے پی ٹی آئی کے اورنگ زیب خان کھچی 46900 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 226 میرپور خاص میں پی پی پی کے حسین شاہ جیلانی 19354 ووٹوں کے ساتھ برتری لئے ہوئے تھے۔ مسلم لیگ فنکشنل کے قربان علی شاہ 6548 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 213 نواب شاہ سے پی پی پی کی ڈاکٹر عذرا افضل 7118 ووٹوں کی برتری لئے ہوئے تھیں۔ آزاد امیدوار سردار شیر محمد رند 1078 ووٹوں کے ساتھ دوسری پوزیشن پر تھے۔ این اے 222 ٹنڈو محمد خان پیپلز پارٹی کے نوید قمر 30939 ووٹوں کے ساتھ سبقت لئے ہوئے تھے۔ مسلم لیگ فنکشنل کے سجاد سرہندی 9302 ووٹوں کے ساتھ دوسری پوزیشن پر تھے۔ این اے 51 راولپنڈی مسلم لیگ (ن) کے جاوید اخلاص 82330 ووٹوں سے کامیاب ہو گئے، پیپلز پارٹی کے راجہ پرویز اشرف نے 21125 ووٹ لئے۔ پشاور 2 این اے 2 سے تحریک انصاف کے انجینئر حامد الحق کامیاب قرار پائے، انہوں نے 41361 ووٹ حاصل کئے۔ این اے 233 دادو پیپلز پارٹی کے عمران ظفر لغاری 12369 کے ساتھ برتری لئے ہوئے تھے، مسلم لیگ (ن) کے لیاقت علی خان جتوئی 9082 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ ضلع میانوالی کے قومی اسمبلی کے دونوں حلقوں سے تحریک انصاف نے بھاری ووٹوں کی برتری سے جیت لی ہیں، غیر سرکاری نتائج کے مطابق حلقہ این اے 71 سے عمران خان نے بھاری اکثریت سے مدمقابل مسلم لیگ (ن) کے امیدوار عبید اللہ شادی خیل کو شکست دی ہے۔ اسی طرح تحریک انصاف کے امجد علی خان نے مسلم لیگ (ن) کے حمیر حیات روکھڑی کو بھاری ووٹوں سے شکست دی ہے، امجد علی خان نے 95270 سے زیادہ ووٹ حاصل کئے جبکہ مدمقابل مسلم لیگ (ن) کے حمیر حیات روکھڑی نے 30500 کے قریب ووٹ حاصل کئے ہیں۔ این اے 133 ننکانہ صاحب مسلم لیگ (ن) محمد برجیس طاہر 11926 ووٹوں کے ساتھ لیڈ ہوئے تھے۔ پی ٹی آئی کے محمد ارشد ساہی 6647 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 139 قصور 2 میں مسلم لیگ (ن) کے وسیم اختر شیخ 29620 ووٹوں کے ساتھ سبقت لئے ہوئے تھے۔ پی پی پی کے چودھری منظور احمد 13619 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 150 ملتان 3 میں پی ٹی آئی کے مخدوم شاہ محمود قریشی 12616 ووٹ لیکر آئے تھے۔ مسلم لیگ (ن) رانا محمود الحسن 10655 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ رائے ونڈ سے نامہ نگار کے مطابق این اے 128 سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار ملک محمد افضل کھوکھر 98491 ووٹ لے کر پہلے جبکہ پی ٹی آئی اے کے ملک کرامت علی کھوکھر 57020 ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ حسب سابق خواتین نے مردوں کے مقابلے میں زیادہ ووٹ ڈالے جبکہ نتائج کے آنے پر مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کے نعرے بازی اور ڈھول کی تھاپ پر بھنگڑے ڈالنے کا سلسلہ جاری رہا۔ این اے 227 میرپور خاص میں پیپلزپارٹی کے میر منور علی تالپور 56685 ووٹ لیکر آگے تھے۔ مسلم لیگ فنکشنل کے سید عنایت علی شاہ 13301 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 141 قصور 4 سے مسلم لیگ (ن) کے رانا محمد اسحاق خان 60231 ووٹ لے کر آگے تھے جبکہ آزاد امیدوار آصف نکئی 35599 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 228 عمر کوٹ (اولڈ میرپور خاص 3) پیپلزپارٹی کے نواب محمد یوسف تالپور 25692 ووٹ لیکر آگے تھے۔ تحریک انصاف کے مخدوم شاہ محمود قریشی 21071 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 186 بہاولپور 4 میں مسلم لیگ (ن) میاں ریاض حسین پیرزادہ 24145 ووٹوں سے برتری لئے ہوئے تھے۔ مسلم لیگ ق کے طارق بشیر چیمہ 15312 ووٹ لیکر دوسری پوزیشن پر تھے۔ این اے 110 سیالکوٹ میں مسلم لیگ (ن) خواجہ محمد آصف 932667 ووٹ لے کر جعیت گئے پی ٹی آئی کے محمد عثمان ڈار 70312 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 115 ظفروال مسلم لیگ (ن) کے میاں رشید 67760 ووٹوں سے جیت گئے جبکہ آزاد امیدوار عرفان عابد 36234 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 59 اٹک 3 سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار آصف علی ملک 15831 ووٹوں کے ساتھ پہلے نمبر پر رہے جبکہ آزاد امیدوار محمد زین الٰہی 10706 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 137 ننکانہ میں مسلم لیگ (ن) کے رائے منصب علی خان 39499 ووٹ لیکر آگے تھے جبکہ آزاد امیدوار مہر اعجاز احمد 30084 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 95 گوجرانوالہ سے مسلم لیگ (ن) کے عثمان ابراہیم 30782 ووٹوں کے ساتھ برتری حاصل کئے ہوئے تھے جبکہ پی ٹی آئی کے علی اشرف مغل 8523 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 96 گوجرانوالہ سے مسلم لیگ (ن) کے خرم دستگیر خان 33335 ووٹوں کے ساتھ آگے تھے جبکہ پی ٹی آئی کے ایس اے حمید 17759 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 97 گوجرانوالہ سے مسلم لیگ (ن) کے محمد رشید ورک 73219 جیت گئے جبکہ پی ٹی آئی کے رانا نعیم الرحمن 18381 دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 98 گوجرانوالہ سے مسلم لیگ (ن) کے میاں طارق 28211 ووٹوں کے ساتھ برتری حاصل کئے ہوئے تھے جبکہ پی پی پی کے امتیاز صفدر وڑائچ 1252 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 99 گوجرانوالہ سے مسلم لیگ (ن) کے رانا عمر نذیر 66163 و وٹوں کے ساتھ جیت گئے جبکہ پی پی پی کے ذوالفقار بھنڈر 19603 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 100 گوجرانوالہ سے مسلم لیگ (ن) کے اظہر قیوم ناہرا 49407 ووٹ لے کر جیت گئے جبکہ آزاد امیدوار رانا بلال اعجاز نے 33244 ووٹ حاصل کئے۔ این اے 101 گوجرانوالہ سے مسلم لیگ (ن) کے جسٹس (ر) افتخار چیمہ 27440 ووٹ لئے جبکہ (ج) لیگ کے محمد احمد چٹھہ 21600 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ عارفوالا میں مسلم لیگ (ن) نے میدان مار لیا، این اے 166 سے مسلم لیگ (ن) کے رانا زاہد حسین خان 43 پولنگ سٹیشنوں سے 20023 ووٹ لے کر آگے تھے جبکہ پی ٹی آئی کے امجد جوئیہ 7543 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 144 اوکاڑہ سے مسلم لیگ (ن) کے عارف چودھری 57300 ووٹ لے کر کامیاب قرار پائے ہیں جبکہ پیپلز پارٹی کی بیگم سکندر اقبال دوسرے نمبر پر تھی۔ این اے 20 مانسہرہ ون سے مسلم لیگ (ن) کے سردار محمد یوسف 28270 ووٹ لے کر لیڈ لئے ہوئے تھے، تحریک انصاف کے محمد اعظم خان سواتی 14840 ووٹ لے کر دوسری پوزیشن پر تھے۔ این اے 65 سرگودھا 2 میں مسلم لیگ (ن) کے محسن شاہ نواز رانجھا 14950 ووٹوں کے ساتھ پہلے، مسلم لیگ (ق) کے چودھری غیاث احمد 8407 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 4 پشاور 4 میں تحریک انصاف کے گلزار خان 46862 ووٹ لے کر پہلے، مسلم لیگ (ن) کے ناصر خان موسیٰ زئی 38000 ووٹوں سے دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 102 حافظ آباد ون میں مسلم لیگ (ن) کی سائرہ افصل تارڑ 30957 ووٹوں سے پہلے نمبر پر تھیں، آزاد امیدوار چودھری شوکت علی 22853 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 227 میرپور خاص میں پیپلز پارٹی کے منور علی تالپور 58057 ووٹوں کے ساتھ آگے، مسلم لیگ فنکشنل کے سید عنایت علی شاہ 13654 ووٹوں کے ساتھ دوسری پوزیشن پر تھے۔ این اے 26 بنوں جے یو آئی کے اکرم خان درانی 30736 ووٹ لے کر پہلی، آزاد امیدوار مولانا نسیم علی شاہ 5719 ووٹوں کے ساتھ دوسری پوزیشن پر تھے۔ این اے 203 شکارپور کم سکھر لاڑکانہ مسلم لیگ (ن) کے غوث بخش خان 25534 ووٹوں کے ساتھ پہلے، پیپلز پارٹی کے سردار واحد بخش 1389 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 125 لاہور 8 تحریک انصاف حامد خان 16421 ووٹوں کے ساتھ لیڈ لئے ہوئے تھے، مسلم لیگ (ن) کے خواجہ سعد رفیق 12936 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 154 لودھران ون سے تحریک انصاف کے جہانگیر خان ترین 72735 ووٹ لے کر کامیاب ان کے مدمقابل آزاد امیدوار محمد صدیق خان بلوچ 41639 ووٹ حاصل کر سکے۔ این اے 109 منڈی بہا¶الدین ٹو سے مسلم لیگ (ن) کے ناصر اقبال بوسال 53690 ووٹوں کے ساتھ سبقت لئے ہوئے تھے، پیپلز پارٹی کے نذر محمد گوندل 18322 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 66 سرگودھا 3 سے چودھری حامد حمید (مسلم لیگ ن) 32460 ووٹ لے کر پہلے اور عبداللہ ممتاز کاہلوں (تحریک انصاف) 10060 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 76 میں 100 پولنگ سٹیشنوں کے غیر سرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے محمد طلال چودھری 42623 ووٹوں کے ساتھ آگے تھے، پیپلز پارٹی کے ملک نواب شیروسیر 13388 کے ساتھ دوسرے، پاکستان تحریک انصاف کے محمد وقار وصی 4692 ووٹوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر تھے۔ این اے 145 رینالہ خورد میں مسلم لیگ (ن) کے عاشق شاہ کرمانی 20 ہزار ووٹوں کے ساتھ آگے تھے۔ این اے 145 اوکاڑہ 3 سے مسلم لیگ (ن) کے سید عاشق حسین کرمانی کو 25609 سے واضح برتری حاصل تھی جبکہ آزاد امیدوار رانا خضر حیات 7500 لے کر دوسرے جبکہ پی پی کے صمصام بخاری 6129 ووٹ لے کر تیسرے نمبر پر تھے۔ این اے 168 وہاڑی ٹو سے پیپلز پارٹی کی نتاشا دولتانہ 22201 ووٹوں کے ساتھ پہلے، مسلم لیگ (ن) کے سید ساجد مہدی 14243 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 151 ملتان فور سے مسلم لیگ (ن) کے سکندر حیات خان 10259 ووٹ لے کر آگے، پی ٹی آئی کے محمد سلیمان قریشی (تحریک انصاف) 8396 ووٹ لے کر پیچھے تھے۔ این اے 223 ٹنڈو الہ یار کم مٹیاری حاجی عبدالستار (پیپلز پارٹی) 43430 ووٹ لے کر پہلے، راحیلہ گل مگسی (مسلم لیگ ن) 21940 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 200 گھوٹکی ون سے علی گوہر مہر (پیپلز پارٹی) 68499 ووٹ لے کر جیت گئے، خالد احمد خان لُنڈ (آزاد) 39436 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 119 لاہور ٹو سے مسلم لیگ (ن) کے حمزہ شہباز شریف 25346 ووٹوں کے ساتھ برتری لئے ہوئے تھے، پی ٹی آئی کے محمد مدنی 9425 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 199 سکھر کم شکارپور ٹو سے پی پی پی کے سید خورشید شاہ 72 ہزار سے زائد ووٹ لے کر جیت گئے۔ مسلم لیگ (فنکشنل) کے عنایت اللہ دوسری پوزیشن پر رہے۔ این اے 143 اوکاڑہ ون سے مسلم لیگ (ن) کے ندیم عباس ربیرہ 98410 ووٹ لے کر سبقت لئے ہوئے تھے، مسلم لیگ (ق) کے رائے محمد اسلم کھرل 82848 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 60 چکوال ون سے مسلم لیگ (ن) کے میجر (ر) طاہر اقبال 20565 ووٹوں کے ساتھ لیڈ لئے ہوئے تھے، آزاد امیدوار سردار غلام عباس خان 14269 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 198 سکھر کم شکارپور ون سے پیپلز پارٹی کے نعمان اسلام شیخ 12426 ووٹ لے کر پہلے، متحدہ کے منور علی چوہان 4536 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 44 قبائلی علاقہ 9 سے مسلم لیگ (ن) کے شہاب الدین خان 17356 ووٹ لے کر جیت گئے، جماعت اسلامی کے سردار خان 7263 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ اےن اے 89 مےں 80 پولنگ سٹےشنوں کے غےر حتمی، غےر سرکا ری نتائج کے مطابق مسلم لےگ (ن) کے شےخ محمد اکرم 30069 ووٹ لےکر پہلے نمبر پر ، جبکہ متحدہ دےنی محاز کے مولانا محمد احمد لدھےانوی 20890 ووٹ لےکر دوسرے نمبر پر رہے ۔ اےن اے 88 مسلم لےگ (ن) کی غلام بی بی بھروانہ 32990 ووٹ لےکر پہلے نمبر پر جبکہ آزاد امےدوار مخدوم سےد اسد حےات 28251 لےکر دوسرے نمبر پر رہے۔ ضلع راولپنڈی اور اسلام آباد کی قومی اسمبلی کی 9 نشستوں پر مسلم لیگ (ن) نے 5 اور تحریک انصاف نے 3 اور عوامی مسلم لیگ نے ایک نشست پر کامیابی حاصل کی ہے۔ این اے 48 اسلام آباد ون سے تحریک انصاف کے صدر مخدوم جاوید ہاشمی نے مسلم لیگ (ن) کے انجم عقیل کو شکست دے دی ہے جبکہ این اے 49 سے مسلم لیگ (ن) کے ڈاکٹر طارق فضل چودھری نے تحریک انصاف کے الیاس مہربان کے مقابلے میں کامیابی حاصل کی جبکہ این اے 51 پر مسلم لیگ (ن) کے راجہ جاوید اخلاق نے پیپلز پارٹی کے رہنما و سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کو شکست دے دی۔ قومی اسمبلی کے سابق قائد حزب اختلاف چودھری نثار علی خان این اے 52 پر مسلم لیگ (ن) کے محمد بشارت راجہ کو شکست دی جبکہ این اے 53 پر تحریک انصاف کے غلام سرور خان کے ہاتھوں شکست کھا گئے۔ اسی طرح این اے 54 سے مسلم لیگ (ن) کے ملک ابرار، تحریک انصاف کی حنا منظور کے مقابلے میں جیت گئے ہیں۔ این اے 55 پر عوامی مسم لیگ کے صدر شیخ رشید احمد نے مسلم لیگ (ن) کے ملک شکیل اعوان کو شکست دے دی جبکہ این اے 56 سے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے مسلم لیگ (ن) کے حنیف عباسی کے مقابلے میں کامیابی حاصل کی۔ حلقہ اےن اے 104 گجرات سے مسلم لےگ (ن) کے سابق اےم اےن اے نوابزادہ مظہر علی خان ق لیگ کے امےدوار چودھری وجاہت حسےن سے آگے تھے۔ حلقہ اےن اے 105 مےں پروےز الٰہی جیت گئے۔ مسلم لےگ (ن) کے چودھری مبشر حسےن دوسرے جبکہ الحاج افضل گوندل تیسرے، پےپلز پارٹی کے احمد مختار 9503 چوتھے نمبر پر تھے۔ اےن اے 106 مےں مسلم لےگ (ن) کے چودھری جعفر اقبال آزاد امےدوار سےد نور الحسن سے آگے جا رہے تھے جبکہ قمرزمان کائرہ تےسری پوزےشن پر تھے۔ اےن اے 107 مےں مسلم لےگ (ن) کے عابد رضا آگے جبکہ (ق) لےگ کے رحمن نصےر مرالہ دوسری پوزےشن پر تھے۔ این اے 161 ساہیوال سے مسلم لیگ (ن) کے چودھری محمد اشرف کو 67400 ووٹوں کی واضح برتری حاصل تھی جبکہ مدمقابل امیدوار تحریک انصاف ملک محمد یار ڈھکو نے 22 ہزار ووٹ لئے۔ این اے 160 سے مسلم لیگ (ن) کے سید عمران احمد شاہ کو 20 ہزار ووٹوں کی واضح برتری حاصل تھی۔ تحریک انصاف کے امیدوار علی شکور خاں دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے وہاڑی کے 69 پولنگ سٹیشنوں پر آزاد امیدوار طاہر اقبال چودھری 22925 ووٹ لے کر پہلے اور مسلم لیگ (ن) کی تہمینہ دولتانہ 21098 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر تھیں جبکہ پی ٹی آئی کے آفتاب خاں کھچی 6526 ووٹ لے کر تیسرے نمبر پر تھے۔ این اے 168 سے 93 پولنگ سٹیشنوں کے رزلٹ کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے سید ساجد مہدی سلیم شاہ 25347 ووٹ لیکر پہلے اور پی ٹی آئی کے اسحاق خان خاکوانی 21135 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 162 چیچہ وطنی سے تحریک انصاف کے رائے حسن نواز خاں اور آزاد امیدوار حاجی محمد ایوب میں سخت مقابلہ رہا۔ این اے 163 چیچہ وطنی میں مسلم لیگ (ن) کے چودھری منیر ازہر جٹ واضح برتری سے کامیاب رہے۔ این اے 171 ڈیرہ غازیخان سے مسلم لیگ (ن) کے محمد امجد فاروق کھوسہ 24173 ووٹوں کے ساتھ برتری کے ساتھ آگے تھے۔ پیپلز پارٹی کے خواجہ شیراز محمود 19784 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 142 قصور 5 سے مسلم لیگ (ن) کے رانا محمد حیات خاں 30044 ووٹوں کے ساتھ برتری حاصل کئے ہوئے تھے جبکہ (ق) لیگ کے سردار طالب حسن نکئی 25452 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 139 قصور کے 102 پولنگ سٹیشنز کے رزلٹ کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے امیدوار وسیم اختر شیخ 35323 ووٹ لے کر سب سے آگے تھے جبکہ پیپلزپارٹی کے امیدوار چودھری منظور نے 15652 اور تحریک انصاف کے سردار محمد حسین ڈوگر نے 10203 ووٹ حاصل کئے تھے۔ این اے 141 سے مسلم لیگ (ن) کے رانا اسحاق خاں 60231 ووٹ لیکر جیت گئے۔ آزاد امیدوار سردار آصف نکئی نے 35599 ووٹ حاصل کئے۔ این اے 135 کے 231 میں سے 37 پولنگ سٹیشنوں کے غیرحتمی نتائج کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے چودھری برجیس طاہر 20545 ووٹ لیکر پہلے اور تحریک انصاف کے حاجی محمد ارشد ساہی 13634 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 76 سے چودھری طلال 30 ہزار ووٹوں کی برتری سے آگے تھے۔ این اے 16 ہنگو تحریک انصاف کے حاجی خیال زمان ہوئے تھے جے یو آئی (ف) کے مولانا میاں حسین جلالی 8 ہزار ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ پاکستان مسلم لیگ (ن) نے ضلع خوشاب کی دوقومی اور چار صوبائی نشستوں پر کلین سویپ کر دیا۔ حلقہ این اے 70 سے ملک شاکر بشیر اعوان 22 ہزار سے زائد، سمیرا ملک 25 ہزار سے زائد ووٹ لیکر اپنے مخالف امیدواروں کو چت کرنے میں کامیاب ہو گئے۔ غیرحتمی نتائج کے مطابق ملک شاکر بشیر اعوان حلقہ این اے 70، سمیرا ملک حلقہ این اے 69 سے ایم این اے منتخب ہو گئیں۔ این اے 62 جہلم ون سے چودھری خادم حسین مسلم لیگ (ن) 50525 ووٹ لے کامیاب ہو گئے، چودھری محمد ثقلین تحریک انصاف 23500 دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 63 جہلم ٹو سے راجہ اقبال حیدر مہدی (مسلم لیگ ن) 62735 ووٹ لے کر جیت گئے، چودھری فواد حسین (ق لیگ) 35650 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ 11 مئی کے انتخابات میں غیر سرکاری نتائج کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی نے اندرون سندھ جبکہ ایم کیو ایم نے کراچی میں میدان مار لیا۔ دونوں جماعتوں نے اندرون سندھ اور کراچی میں بالترتیب فیصلہ کن اکثریت حاصل کرلی ہے۔ غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق ابتدائی گنتی میں کراچی میں قومی اسمبلی کی 20 میں سے 18 نشستوں پر ہونے والی پولنگ میں ایم کیو ایم نے 12 سیٹیں جیت لیں تھیں جبکہ 3 نشستوں پر پاکستان پیپلز پارٹی کو واضح برتری حاصل ہے۔ واضح رہے کہ کراچی میں قومی اسمبلی کی کل 20 نشستیں ہیں ایک نشست این اے 254 کورنگی پر امیدوار کے قتل کی وجہ سے الیکشن ملتوی کیا جاچکا تھا جبکہ دوسری نشست این اے 250 پر مختلف جماعتوں کی شکایات اور ڈی آر او کی شکایات پر الیکشن کمیشن نے 42 پولنگ سٹیشنوں پر پولنگ روک دی اور یہاں دوبارہ پولنگ کرانے کا اعلان کیا گیا ہے۔ کراچی میں قومی اسمبلی کی نشستوں حلقہ این اے 239 ماری پور کیماڑی پر سلمان مجاہد بلوچ پی پی پی واضح برتری کے ساتھ آگے تھے۔ این اے 240 بلدیہ سے ایم کیو ایم کے خواجہ سہیل منصور‘ این اے 241 اورنگی سے ایم کیو ایم کے ایس اے اقبال قادری‘ این اے 242 قصبہ اورنگی سے ایم کیو ایم کے محبوب عالم‘این اے 243 نیو کراچی نارتھ کراچی سے ایم کیو ایم کے عبدالوسیم‘ این اے 244 نیوکراچی فیڈرل بی ایریا سے ایم کیو ایم کے شیخ صلاح الدین‘ این اے 245 نارتھ ناظم آباد سے ایم کیو ایم کے ریحان ہاشمی‘ این اے 247 ناظم آباد‘ گلبہار سے ایم کیو ایم کے سفیان یوسف‘ این اے 248 لیاری سے پیپلز پارٹی کے شاہجہان بلوچ‘ این اے 249 رنچھوڑ لائن گارڈن سے ایم کیو ایم کے ڈاکٹر فاروق ستار‘ این اے 251 محمود آباد سوسائٹی سے ایم کیو ایم کے علی رضا عابدی‘ این اے 252 ایم کیو ایم کے رشید گوڈیل‘ این اے 253 گلشن اقبال سے ایم کیو ایم کے مزمل قریشی‘ این اے 255 لانڈھی سے ایم کیو ایم کے آصف حسنین‘ این اے 256 شاہ فیصل سے ایم کیو ایم کے اقبال محمد علی خان‘ این اے 257 ملیر سے پی پی پی کے نسیم خان‘ این اے 258 گڈاپ‘ بن قاسم سے پیپلز پارٹی کے عبدالرزاق راجہ جیت رہے تھے۔ سندھ میں پاکستان مسلم لیگ فنکشنل تیسری بڑی جماعت کی حیثیت سے سامنے آئی ہے اس نے خیرپور اور سانگھڑ کے اضلاع میں کامیابی یقینی بنالی ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے امیدواروں نے کراچی اور اندرون سندھ کے بعض حلقوں میں حوصلہ افزا تعداد میں ووٹ حاصل کئے ہیں جبکہ مسلم لیگ نون نے بھی اندرون سندھ دادو اور خیرپور میں بھرپور ووٹ حاصل کئے ہیں۔ نبیل گبول این اے 248 کراچی 8 سے ایک لاکھ 78 ہزار ووٹوں سے جیت گئے۔ این اے 170 وہاڑی سے مسلم لیگ (ن) کے سعید احمد 57846 ووٹوں سے کامیاب ہوئے ہیں جبکہ تحریک انصاف کے اورنگزیب کھچی 46 ہزار سے زائد ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 67 سے مسلم لیگ ن کے امیدوار ڈاکٹر ذوالفقار احمد بھٹی 85201 ووٹ لیکر کامیاب قرار پائے ہیں ان کے مدمقابل مسلم لیگ ق کے چودھری انور علی چیمہ تھے۔ غیر سرکاری نتائج کے مطابق حلقہ این اے 94 کے 86 پولنگ سٹیشنوں کے رزلٹ کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے چودھری اسد الرحمن 31657 ووٹ لے کر پہلے نمبر پر رہے۔ این اے 93 سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار چودھری جنید انوار 36541 ووٹ لیکر کامیاب ہو گئے ان کے مقابلے میں تحریک انصاف کے چودھری محمد اشفاق نے 26283 ووٹ لئے۔ این اے 189 سے مسلم لیگ ن کے میاں عالم داد لالیکا نے 242 پولنگ سٹیشنوں میں سے 185 پولنگ سٹیشنوں میں 54 ہزار ووٹ حاصل کرکے برتری حاصل کی ہے دوسرے نمبر پر تحریک انصاف کے میاں ممتاز احمد میتانہ ہیں جنہوں نے 18 ہزار ووٹ لئے۔ این اے 30 سوات سے تحریک انصاف کے سلیم الرحمن 39600 ووٹ لیکر کامیاب ہو گئے جبکہ مسلم لیگ (ن) کے امیرمقام ہار گئے۔ این اے 29 سوات سے تحریک انصاف کے مراد سعید 35200 ووٹ لیکر کامیاب جبکہ جے یو آئی (ف) کے مولانا نظام الدین ہار گئے۔ این اے 61 چکوال سے مسلم لیگ (ن) کے سردار ممتاز خان (ق) لیگ کے پرویز الٰہی کو ہرا کر کامیاب ہوگئے۔ انہوں نے 33 ہزار سے زائد ووٹ لئے۔ این اے 3 پشاور 3 سے تحریک انصاف کے ساجد نواز 19250 ووٹوں کے ساتھ پہلے، جے یو آئی (ف) کے حاجی غلام علی 5200 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 204 لاڑکانہ ون سے پیپلز پارٹی کے محمد ایاز سومرو 9866 ووٹ لیکر کامیاب ہو گئے۔ مسلم لیگ فنکشنل کی مہتاب اکبر راشدی 3875 ووٹ لیکر دوسری پوزیشن پر ہیں۔ این اے 184 بہاولپور ٹو سے مسلم لیگ (ن) کے میاں نجیب الدین اویسی 32400 ووٹ لیکر جیت گئے۔پی پی پی کی خدیجہ عامر 11100 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر رہیں۔ این اے 154 لودھراں ون سے تحریک انصاف کے جہانگیر خان ترین 72735 ووٹ لیکر کامیاب ہوئے۔ آزاد امیدوار محمد صدیق خان بلوچ 41639 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 182 لیہ ٹو سے مسلم لیگ (ن) کے پیر سید محمد ثقلین شاہ بخاری 66342 ووٹوں کے ساتھ لیڈ لئے ہوئے تھے، پیپلز پارٹی کے ملک نیاز احمد جھکڑ 57629 ووٹوں کے ساتھ دوسری پوزیشن پر تھے۔ این اے 141 قصور فور سے مسلم لیگ (ن) کے رانا محمد اسحاق خان 60231 ووٹ لے کر جیت گئے، آزاد امیدوار سردار آصف نکئی نے 35599 ووٹ لئے۔ این اے 159 خانےوال فور سے مسلم لیگ (ن) کے چودھری افتخار نذیر 95340 ووٹ لے کر کامیاب ہو گئے، تحریک انصاف کے ملک غلام مرتضیٰ متیلا نے 45248 ووٹ لئے۔ این اے 69 خوشاب ون سے مسلم لیگ (ن) کی امیدوار سمیرا ملک 57731 ووٹ لے کر کامیاب ہوگئیں جبکہ ان کے مقابلے میں تحریک انصاف کے ملک عمر اسلم اعوان نے 26507 ووٹ حاصل کئے۔ این اے 70 خوشاب ٹو سے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے شاکر بشیر اعوان 72547 ووٹ لے کر جیت گئے، ان کے مقابلے آزاد امیدوار شجاع محمد بلوچ نے 42797 ووٹ لئے۔ این اے 66 سرگودھا سے مسلم لیگ (ن) کے حامد حمید 37900 ووٹ لیکر کامیاب رہے جبکہ ان کے مقابلے میں پی ٹی آئی کے بیرسٹر عبداللہ ممتاز کو 12265 ووٹ ملے۔ پیپلز پارٹی کے تبسم قریشی کو 8357 ووٹ ملے۔ این اے 67 سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار ذوالفقار بھٹی 85201 ووٹ لیکر کامیاب ہوئے جبکہ انور علی چیمہ کو 62900 ووٹ ملے۔ این اے 94 سے مسلم لیگ (ن) کے اسد الرحمن رمدے 55757 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے ہیں۔ این اے 33 لوئر دیر سے جماعت اسلامی کے صاحبزادہ عتیق اللہ 33 ہزار سے زائد ووٹوں سے کامیاب ہوئے ہیں۔ این اے 186 بہاولپور فور سے مسلم لیگ (ن) کے ریاض حسین پیرزادہ 31633 ووٹوں کے ساتھ پہلے نمبر تھے، تحریک انصاف کے نعیم الدین وڑائچ 20316 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 207 گاڑکانہ کم شکارپور سے پی پی پی کی فریال تالپور 70800 ووٹ لیکر جیت گئیں۔ غنویٰ بھٹو (پیپلز پارٹی شہید بھٹو) نے 20400 ووٹ لئے۔ این اے 129 لاہور بارہ سے مسلم لیگ (ن) کے میاں محمد شہباز شریف 73179 ووٹ لے کر کامیاب ہو گئے۔ چودھری محمد منشا سندھو (تحریک انصاف) نے 19237 ووٹ لئے۔ این اے 49 اسلام آباد ٹو سے مسلم لیگ (ن) کے ڈاکٹر طارق فضل چودھری 67150 ووٹ لے کر آگے، تحریک انصاف کے چودھری الیاس مہران 42507 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 182 بہاولپور سے مسلم لیگ (ن) کے میاں نجیب الدین 32400 ووٹ لیکر جیت گئے۔ این اے 170 وہاڑی سے مسلم لیگ (ن) کے سعید احمد منہیس 58705 ووٹ لیکر کامیاب ہو گئے، تحریک انصاف کے اورنگزیب کھچی 46988 ووٹ لے سکے۔ این اے 124 سے مسلم لیگ (ن) کے شیخ روحیل اصغر 119000 ووٹ لےکر کامیاب ہو گئے۔ تحریک انصاف کے ولید اقبال نے 20589 ووٹ لئے۔ این اے 174 راجن پور سردار جعفر خان لغاری (مسلم لیگ ن) 61000 ووٹ لیکر لیڈ لئے ہوئے تھے، سردار نصراللہ خان دریشک 42700 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ شیخوپورہ کے حلقہ این اے 134 سے مسلم لیگ ن کے سردار عرفان ڈوگر 29700 ووٹ لیکر جیت گئے ہیں جبکہ ان کے مدمقابل مسلم لیگ ق کے خرم منور منج نے 26800 ووٹ حاصل کئے ہیں۔ این اے 5 نوشہرہ ون پرویز خٹک (تحریک انصاف) 15729 ووٹوں کے ساتھ سبقت لئے ہوئے تھے، آصف لقمان قاضی (جماعت اسلامی) 6764 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر تھے۔ این اے 6 نوشہرہ 2 سراج محمد خان (تحریک انصاف) 14941 ووٹوں کے ساتھ پہلے، سید ذوالفقار علی شاہ باچا (مسلم لیگ ن) 7716 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 182 لیہ سے مسلم لیگ ن کے امیدوار محمد ثقلین بخاری جیت گئے۔ این اے 214 نوابشاہ سے پیپلز پارٹی کے غلام مصطفےٰ شاہ 89000 سے زائد ووٹ لیکر کامیاب ہو گئے۔ این اے 87 سے مسلم لیگ ن کے مہر غلام محمد لالی نے واضح برتری حاصل کی۔ غیرسرکاری، غیر حتمی نتائج کے مطابق فیصل آباد ڈسٹرکٹ کے قومی اسمبلی کے دس حلقوں میں مسلم لیگ (ن) نے کلین سویپ کر لیا ہے۔ اسی طرح صوبائی اسمبلی کی 21 نشستوں میں سے 20 نشستوں پر مسلم لیگ ن نے کامیابی حاصل کی ہے جبکہ ایک نشست مسلم لیگ ن کے سابق رکن صوبائی اسمبلی ظفر اقبال ناگرہ نے آزاد امیدوار کی حیثیت سے جیتی ہے اور اعلان کیا ہے کہ وہ یہ نشست میاں محمد نواز شریف کو تحفے میں پیش کریں گے۔ پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما راجہ ریاض احمد خان بری طرح شکست سے دوچار ہو گئے۔ اسی طرح این اے 77 اور پی پی 55 میں (ق) لیگ کے سینئر رہنما چودھری ظہیر الدین خان بھی بری طرح شکست سے دوچار ہو گئے۔ این اے 75 چک جھمرہ میں مسلم لیگ ن کے امیدوار کرنل (ر) غلام رسول ساہی نے پیپلز پارٹی کے طارق محمود باجوہ اور تحریک انصاف فواد چیمہ کو شکست دے کر کامیابی حاصل کی ہے۔ این اے 76 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار طلال چودھری نے پیپلز پارٹی کے نواب شیر وسیر اور تحریک انصاف کے وقار وصی ظفر کوشکست دے کر کامیابی حاصل کی ہے۔ این اے 77 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار چودھری عاصم نذیر نے چودھری ظہیر الدین کو شکست دی ہے۔ این اے 78 تاندلیانوالہ میں بھی مسلم لیگ ن کے امیدوار رجب علی بلوچ نے آزاد امیدوار چودھری صفدر شاکر کو شکست دی ہے۔ این اے 79 سمندری میں مسلم لیگ ن کے امیدوار شہباز بابر گجر کامیاب ہوئے ہیں۔ این اے 80 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار میاں محمد فاروق نے رانا آصف توصیف اور تحریک انصاف کے میاں محمد نعیم کو شکست دی ہے۔ این اے 81 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار ڈاکٹر نثار احمد نے پیپلز پارٹی کے چودھری سعید اقبال کو شکست دی ہے۔ این اے 82 میں مسلم لیگ ن کے رانا محمد افضل کامیاب ہوئے ہیں۔ انہوں نے سنی اتحاد کونسل مسلم لیگ ق اور پیپلز پارٹی کے حمایت یافتہ امیدوار صاحبزادہ حامد رضا اور تحریک انصاف کے کیپٹن (ر) نثار اکبر کوشکست دی ہے۔ این اے 84 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار چودھری عابد شیرعلی نے پیپلز پارٹی کے ملک اصغر علی قیصر اور تحریک انصاف کے فرخ حبیب کوشکست دے کر کامیابی حاصل کی ہے۔ این اے 85 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار حاجی محمد اکرم انصاری نے پیپلز پارٹی کے ملک سردار اسلم ٹرالے والے اور تحریک انصاف کے بریگیڈئر (ر) امتیاز کاہلوں کو شکست دے کر کامیابی حاصل کی ہے۔ این اے 112پر مسلم لیگ (ن) کے امیدوار رانا شمیم احمد خان کو مخالف امیدوار پر واضح برتری حاصل ہے۔208 پولنگ سٹیشنوں سے ملنے والے غیر حتمی نتائج کے مطابق رانا شمیم احمد خان نے اب تک 98245جبکہ انکے قریب ترین امیدوار سلمان سیف چیمہ نے 27359ووٹ حاصل کئے۔ na-111میں مسلم لیگ (ن) کے چوہدری ارمغان سبحانی الیکشن پہلی پوزیشن پر تھے جبکہ پی ٹی آئی کے امیدوار چوہدری محمد اجمل چیمہ دوسرے نمبر پر تھے اور پیپلز پارٹی کی امیدوار سابق وفاقی وزیر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان تیسرے نمبر پر تھیں۔ شیخوپورہ کے حلقہ این اے 133 سے مسلم لیگ ن کے میاں جاوید لطیف 57732 ووٹ لیکر جیت گئے جبکہ ان کے مدمقابل آزاد امیدوار چودھری محمد سعید ورک نے 18416 ووٹ حاصل کئے۔ این اے 117 منڈی بہاﺅ الدین سے مسلم لیگ ن کے طارق یعقوب 25180 ووٹ لیکر کامیاب جبکہ ان کے مدمقابل پی ٹی آئی کے جاوید نے 13592 ووٹ لئے۔ این اے 122 لاہور ایاز صادق 70324 ، عمران خان 61244، این اے 4 پشاور گلزار خان 33720 (تحریک انصاف) ووٹ لے کر کامیاب ہو گئے۔ ناصر موسیٰ زئی (مسلم لیگ ن) 6421 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 89 سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار شیخ محمد اکرم 47938 ووٹ لیکرکامیاب ہو گئے۔ ان کے مقابلے میں مولانا احمد لدھیانوی کی 32529 ووٹ حاصل کئے ہیں۔ این اے 10 مردان 2 علی محمد خان (تحریک انصاف) 11000 ووٹ لے کر کامیاب ہو گئے۔ شیخ الحدیث مولانا محمد قاسم جمعیت علماءاسلام (ف) 7000 ووٹ لے سکے۔ این اے 33 اپر دیر صاحبزادہ طارق اللہ (جماعت اسلامی) 30554 ووٹ لے کر جیت گئے۔ نجم الدین خان (پیپلز پارٹی) 19174 نے ووٹ لئے۔ این اے 122 لاہور 4 سردار ایاز صادق (مسلم لیگ ن) 70324 ووٹ لے کر کامیاب ہو گئے۔ عمران خان (چیئرمین تحریک انصاف) 61244 ووٹ لئے۔ این اے 165 پاکپتن 2 سید محمد اطہر حسین شاہ گیلانی (مسلم لیگ ن) 51500 ووٹ لے کر آگے۔ میاں احمد رضا خان مانیکا (تحریک انصاف) 22500 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ خانیوال کے قومی حلقہ 157 میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے محمد خان ڈاہا 150 پولنگ سٹیشنوں میں 30 ہزار سے زائد ووٹ لے کر جیت رہے تھے جبکہ ان کے مقابلے میں پاکستان مسلم لیگ (ق) کے امیدوار سردار حامد یار ہراج 20 ہزار ووٹ حاصل کر سکے۔ تحریک انصاف کے امیدوار کرنل عابد کھگہ تیسرے نمبر پر رہے۔ این اے 181 لیہ 1 صاحبزادہ فیض الحسن (مسلم لیگ ن) 71324 ووٹ کے ساتھ آگے، سردار بہادر احمد خان سیہڑ (پیپلز پارٹی) 53622 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 210 کشمور سے پیپلز پارٹی کے احسان الرحمن جیت گئے۔ این اے 145 اوکاڑہ 3 سید محمد عاشق حسین شاہ (مسلم لیگ ن) 63345 ووٹوں کے ساتھ پہلے، سید صمصام علی بخار (پیپلز پارٹی) 31525 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر تھے۔ شیخوپورہ کے حلقہ این اے 131 سے مسلم لیگ (ن) کے رانا افضال 36989 ووٹ لیکر جیت گئے ہیں جبکہ ان کے مدمقابل آزاد امیدوار عمر آفتاب ڈھلوں نے 17932 ووٹ حاصل کئے ہیں۔ این اے 224 بدین سردار کمال خان (پیپلزپارٹی) 67670 ووٹ لیکر آگے علی اصغر ہالیپوتو (مسلم لیگ (فنکشنل) 44900 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر تھے۔ این اے 10 مردان سے تحریک انصاف کے علی محمد خان 21811 ووٹ لیکر جیت گئے جبکہ جے یو آئی (ف) کے مولانا محمد قاسم 16900 ووٹ لیکر ہار گئے۔ پاکپتن این اے 165 سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار سید اطہر گیلانی نے غیرسرکاری غیر حتمی نتائج کے مطابق 56000 ہزار سے زائد ووٹ حاصل کرکے کامیابی حاصل کی جبکہ ان کے مدمقابل تحریک انصاف کے امیدوار میاں احمد رضا مانیکا 32459 ووٹ حاصل کرکے دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 145 اوکاڑہ مسلم لیگ(ن) کے عاشق حسین کرمانی 65345 ووٹ لیکر جیت گئے جبکہ این اے 160 ساہیوال مسلم لیگ (ن) کے پیر عمران شاہ کامیاب ہو گئے۔ این اے 160 سے مسلم لیگ (ن) کے پیر عمران شاہ کامیاب ہو گئے۔ جنرل الیکشن 2013ءمیں ملتان میں گیلانی خاندان کے امیدواران کو بری طرح شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ وزیراعظم پاکستان کے اہم ترین عہدہ پر چار سال براجمان رہنے کے باوجود سید یوسف رضا گیلانی حالیہ انتخابات میں اپنی سیاسی ساکھ بچانے میں بری طرح ناکام ہو گئے۔ ضلع ملتان کے قومی اسمبلی کے تین حلقوں میں سابق وزیراعظم کے بھائی سید احمد مجتبیٰ گیلانی سمیت ان کے دو صاحبزادوں سید عبدالقادر گیلانی اور سید علی موسیٰ گیلانی پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدواران کے طور پر میدان میں تھے جنہیں غیر حتمی نتائج کے مطابق بری طرح شکست کا سامنا کرنا پڑا جبکہ صوبائی حلقہ پی پی 200 پر بھی سید یوسف رضا گیلانی کے تیسرے صاحبزادے سید علی حیدر گیلانی امیدوار تھے جنہیں انتخابی مہم کے دوران انتخابات سے دور وز قبل اغوا کر لیا گیا اور وہ بھی شکست سے دوچار ہوئے۔ اس طرح گیلانی خاندان کو ملتان میں چار نشستوں پر ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔ این اے 60 چکوال سے مسلم لیگ ن کے میجر (ر) طاہر اقبال 109000 ووٹ لیکر جیت گئے جبکہ آزاد امیدوار سردار غلام عباس خان ہار گئے۔ این اے 31 شانگلہ سے مسلم لیگ (ن) کے عباداللہ جیت گئے جبکہ تحریک انصاف کے امیدوار ہار گئے۔ این اے 40 قبائلی حلقہ 5 محمد نذیر خان (آزاد) 18252 ووٹ لیکر آگے پیر محمد عقل شاہ جمعیت علماءاسلام (ف) 12238 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 190 مسلم لیگ ن کے رائے طاہر بشیر چیمہ کو 27 ہزار ووٹوں کی برتری حاصل ہے جبکہ مسلم لیگ (ض) کے اعجازالحق دوسرے نمبر پر ہیں۔ این اے 180 مظفرگڑھ 5 سردار عاشق حسین گوپانگ (آزاد) 57672 ووٹوں کے ساتھ آگے سید محمد عبداللہ شاہ غازی (مسلم لیگ ن) 39622 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 172 ڈی جی خان آزاد امیدوار جمال لغاری جیت گئے۔ این اے 151 ملتان سکندر بوسن 98584 ووٹ لے کر کامیاب ہو گئے۔ عبدالقادر گیلانی 72654 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ این اے 91 سے آزاد امیدوار نجف عباس سیال 76594 ووٹ لیکر کامیاب جبکہ مسلم لیگ (ن) کے صاحبزادہ محبوب سلطان 72569 ووٹ حاصل کر سکے۔ این اے 223 ٹنڈو الہ یار عبدالستار بچانی پیپلزپارٹی 76332 ووٹ لے کر پہلے ڈاکٹر راحیلہ گل مگسی مسلم لیگ (ن) 48765 دوسرے نمبر پر تھیں۔ این اے 87 چنیوٹ غلام محمد لالی مسلم لیگ (ن) 63000 ووٹوں کے ساتھ آگے، مخدوم سید فیصل صالح حیات آزاد 42525 دوسرے نمبر پر تھے۔ این اے 86 چنیوٹ قیصر احمد شیخ مسلم لیگ (ن) 65000 ووٹوں کے ساتھ سبقت لئے ہوئے تھے۔ ذوالفقار علی شاہ (پیپلزپارٹی) 42102 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر تھے۔ تازہ ترین اطلاعات کے مطابق ملتان این اے 148 سے مسلم لیگ ن کے عبدالغفار ڈوگر جیت گئے۔ انہوں نے شاہ محمود قریشی کو ہرایا۔ غفار ڈوگر نے 78 ہزار اور شاہ محمود نے 50 ہزار ووٹ لئے۔ قصور کے حلقہ این اے 139 سے مسلم لیگ ن کے شیخ وسیم اختر 85502 ووٹ لیکر جیت گئے۔ ان کے مدمقابل پیپلزپارٹی کے چودھری منظور احمد نے 20314 ووٹ حاصل کئے۔
لاہور (نامہ نگاران+ نوائے وقت رپورٹ) مسلم لیگ ن نے پنجاب اسمبلی کی 291 نشستوں پر ہونے والے الیکشن کے غیر حتمی نتائج کے مطابق واضح اکثریت حاصل کر لی۔ 95 نشستوں پر مسلم لیگ ن کے امیدواروں کی جیت کنفرم ہو گئی جبکہ آخری اطلاعات تک مزید 50 سے زائد سیٹوں پر مسلم لیگ ن کے امیدواروں کو برتری حاصل تھی جبکہ تحریک انصاف کے 5 امیدواروں کی جیت کنفرم ہوئی جبکہ 30 مقامات پر ان کے امیدوار برتری حاصل کئے ہوئے تھے۔ 10 آزاد امیدواروں کی جیت بھی کنفرم ہو گئی جبکہ پیپلز پپارٹی کی 2 سیٹوں پر جیت ہوئی جبکہ 25 سیٹوں پر ان کے امیدواروں کو برتری حاصل تھی۔ مونس الٰہی نے 2 نشستوں پر کامیابی حاصل کی۔ پی پی 32 سے ق لیگ کے عامر سلطان چیمہ نے کامیابی حاصل کی۔ پی پی 29 سے مسلم لیگ ن کے دستگیر لک کامیاب ہوئے۔ پی پی 28 سے مسلم لیگ ن کے ڈاکٹر مختار احمد بھرت، پی پی 30 سے طاہر احمد سندھو جیت گئے۔ پی پی 33 سے مسلم لیگ نے کے عبدالرزاق ڈھلوں جیت گئے۔ ان کے مقابل میں تحریک انصاف کے آصف بگا تھے۔ پی پی 36 سے مسلم لیگ ن رانا منور غوث کامیاب ہوئے۔ ان کے مدمقابل فیصل جاوید گھمن آزاد امیدوار تھے۔ پی پی 37 سرگودھا سے مسلم لیگ ن کے نظام الدین سیالوی 46956 ووٹ لے کر کامیاب ہو گئے۔ تحریک انصاف کے امیدوار اصغر لازی نے 24656 ووٹ حاصل کئے۔ پی پی 58 سے مسلم لیگ ن کے چودھری شاہد خلیل نور 18100 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے دوسرے نمبر پر احسن ریاض فتیانہ نے 14900 ووٹ حاصل کئے۔ پی پی 55 سے مسلم لیگ ن کے رانا شعیب ادریس کو 20 ہزار سے زائد ووٹوں کی برتری حاصل ہے۔ پی پی 190 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار میاں منیر، پیپلزپارٹی کے اشرف خان سوہنا کے مقابلے میں 11000 ووٹوں کی برتری سے کامیاب ہو گئے۔ پی پی 132میں مسلم لیگ ن کے امیدوار چودھری اویس قاسم خان 31 ہزار ووٹ لے کر کامیاب رہے۔ مدمقابل آزاد امیدوار سید سعیدالحسن شاہ نے 17 ہزار ووٹ حاصل کئے۔ پی پی 230 عارفوالہ سے مسلم لیگ ن کے ڈاکٹر فرخ جاوید پہلے نمبر پر، پی ٹی آئی کے محمد نعیم ابراہیم دوسرے پر رہے۔ مسلم لیگ ن کے ڈاکٹر فرخ جاوید نے کامیابی کی ہیٹ ٹرک مکمل کر لی۔ پی پی 73 پر مسلم لیگ ن کے مولانا الیاس چنیوٹی 39500 ووٹ لیکر کامیاب ہو گئے ان کے مقابلے میں تحریک انصاف کے قاضی حسن علی نے 14000 ووٹ حاصل کئے۔ پیپلزپارٹی کے امیدوار سید کلیم امیر نے 9500 ووٹ حاصل کئے۔ پی پی 162 شیخوپورہ سے مسلم لیگ ن کے محمد خرم گلفام 21422 ووٹ لیکر کامیاب رہے۔ آزاد امیدوار اعجاز احمد بیہول 13288 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر رہے۔ پی پی 118 منڈی بہا¶الدین سے ق لیگ کے چودھری مونس الٰہی 27930 ووٹ لیکر کامیاب ہو گئے۔ مسلم لیگ ن کے سکندر حیات گوندل دوسرے نمبر پر رہے۔ ننکانہ میں پی پی 172 سے مسلم لیگ (ن) کے ملک ذوالقرنین ڈوگر نے 22712 ووٹ لیکر کامیابی حاصل کی۔ بہاولپور میں پی پی 273 سے مسلم لیگ ن کے امیدوار میاں کاظم علی پیرزادہ جیت گئے۔ ق لیگ کے بلال مصطفی گردیزی دوسرے نمبر پر رہے۔ پی پی 39 خوشاب سے مسلم لیگ ن کے جاوید اقبال 36297 ووٹ لیکر جیتے۔ پی ٹی آئی کے ملک امیر مختار اعوان نے 26133ووٹ لئے۔ پی پی 22 پر مسلم لیگ ن کے خضر حیات کھگہ، پی پی 22 سے ملک ندیم کامران، پی پی 223 سے ارشد خان لودھی کو واضح برتری حاصل ہے۔ پی پی 68 فیصل آباد 18 سے مسلم لیگ (ن) کامیاب قرار پائی۔ شیخ اعجاز احمد نے 49568 ووٹ حاصل کئے جبکہ پی ٹی آئی کے محمد لطیف نذر 30478 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ پی پی 72 فیصل آباد 22 سے مسلم لیگ (ن) کے خواجہ محمد اسلام 2200 ووٹ لے کر کامیاب رہے جبکہ پی ٹی آئی کے شیخ سلیمان عارف 15214 ووٹ سے دوسرے نمبر پر رہے۔ پی پی 100 گوجرانوالہ 10 سے مسلم لیگ (ن) کے چودھری شمشاد احمد خان کامیاب ہوئے۔ انہوں نے 28754 ووٹ حاصل کئے۔ پی ٹی آئی کے یاسر عرفات رامے نے 5863 ووٹ حاصل کئے۔ پی پی 265 لیہ چار سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار مہر اعجاز احمد اچلاتا 33725 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے۔ پی پی پی کے سردار سجن خان کنگوانی 19001 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ پی پی 266 لیہ 5 سے چودھری اشفاق احمد آزاد امیدوار 22513 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے۔ آزاد امیدوار مہر فضل حسین سمرا 14202 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ پی پی 273 بہاولپور سات سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار میاں محمد کاظم علی پیرزادہ 32000 ووٹ لے کر کامیاب قرار پائے۔ پی ٹی آئی کے راﺅ طارق محمود 17112 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ پی پی 274 بہاولپور 8 سے مسلم لیگ (ن) کے محمد افضل گل 21068 ووٹ سے کامیاب ہوئے۔( ق) لیگ کے ریاض احمد 13884 ووٹ لے سکے۔ پی پی ون راولپنڈی سے مسلم لیگ (ن) کے راجہ اشفاق سرور 28832 ووٹ لے کر کامیاب رہے۔ سردار محمد سلیم خان 16566 ووٹ حاصل کئے۔ پی پی 219 خانیوال سے مسلم لیگ (ن) کے کرم داد واہلہ نے 42236 ووٹ حاصل کئے۔ پی ٹی آئی کے میاں جاوید جہانیاں 21985 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ پی پی 263 لیہ سے پی پی کے شہاب الدین خان 23370 ووٹ لے کر کامیاب رہے۔ پی پی 262 لیہ سے پی ٹی آئی کے عبدالمجید خان نیازی 14190 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جبکہ آزاد امیدوار چودھری محمد اظہر مقبول نے 13983ووٹ لے کر دوسری پوزیشن حاصل کی۔ پی پی 263 لیہ 3 سے پی پی پی کے شہاب الدین خان 23370 ووٹ حاصل کر کے کامیاب رہے۔ دوسرے نمبر پر مسلم لیگ (ن) کے ملک عبدالشکور سورگ 18832 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ صوبائی حلقہ پی پی 177قصور شہر مسلم لیگ (ن) کے امیدوار حاجی نعیم صفدر انصاری34292 ووٹ حاصل کر کے سب سے آگے ہیں جبکہ تحریک انصاف کے سید مظفر حسن کاظمی نے6362 ووٹ حاصل کئے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے اشفاق کمبوہ 5301 ووٹ حاصل کئے۔ پی پی 178میں 45 پولنگ سٹیشنز کے رزلٹ کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے امیدوار ملک احمد سعید 19323 ووٹ حاصل کر کے سب سے آگے آزاد امیدوار شاہد مسعود نے 7278 ووٹ حاصل کئے، جماعت اسلامی کے امیدوار سردار فیصل نے 4390 ووٹ حاصل کئے۔ گجرات میں پی پی 108مےں مسلم لےگ (ن) کے نوابزادہ حےدر مہدی کامیاب ہو گئے۔ پی پی 109مےں مسلم لےگ (ن) کے مےجر (ر) معےن نواز پہلے اورمسلم لےگ (ق) کے چوہدری شفاعت حسےن دوسری پوزےشن پر پی پی 110مےں چوہدری مونس الٰہی (ن) لےگ کے چوہدری رضا متہ سے آگے ہےں پی پی 111مےںمسلم لےگ (ن) کے حاجی عمران ظفر تحرےک انصاف کے چوہدری سلےم سرور جوڑا سے آگے ہےں پی پی 112مےں مسلم لیگ (ن) کے چوہدری اشرف دےونہ 15180 ووٹ لے کر جیت گئے۔ پی پی 113 میں مسلم لیگ (ن) کے میاں طارق محمود (ق) لیگ کے اعجاز رنیاں سے آگے ہیں۔ پی پی 114مےں مسلم لےگ (ن) کے ضلعی صدر و امےدوار ملک حنےف اعوان، پی ٹی آئی کے راجہ نعےم نواز سے آگے ہےں، پی پی 115مےں مسلم لےگ (ن) کے چوہدری شبےر رضا اپنے بھائی چوہدری نعےم رضا سے آگے ہےں۔ پی پی 265 سے مسلم لیگ (ن) کے مہر اعجاز کامیاب ہو گئے۔ وہاڑی کے حلقہ پی پی 236 سے مسلم لیگ (ن) کے میاں ثاقب خورشید 4000 ووٹوں کی برتری سے پہلے، رانا طاہر محمود خاں دوسرے نمبر پر ہیں۔ پی پی 274 بہاولپور سے مسلم لیگ (ن) کے افضل گل 20880 ووٹ لیکر کامیاب رہے۔ چیچہ وطنی میں حلقہ پی پی 224 سے تحریک انصاف کے امیدوار چودھری وحید اصغر ڈوگر کو واضح برتری حاصل ہے۔ پی پی 225 میں مسلم لیگ (ن) کے امیدوار چودھری محمد ارشد جٹ کو برتری حاصل ہے۔ پی پی 226 میں مسلم لیگ (ن) کے چودھری محمد حنیف جٹ کو واضح برتری حاصل ہے۔ پی پی170 کے 132 میں سے 75 پولنگ اسٹیشنوں کے غیر حتمی نتائج کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے حمایت یافتہ آزاد امیدوار چودھری طارق محمود باجوہ سابق ایم پی اے 16997 ووٹ لے کر پہلے اور آزاد امیدوار طارق سعید گھمن 5817 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔ پی پی 171 کے 137 میں سے 70 پولنگ اسٹیشنوں کے غیر حتمی نتائج کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے رانا محمد ارشد 29 ہزار ووٹ لے کر پہلے اور تحریک انصاف کے سردار افتخار ڈوگر 12 ہزار ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔ پی پی 53 سے مسلم لیگ (ن) کی امیدوار عفت معراج کو 25ہزار ووٹوں کی برتری حاصل ہے۔میانوالی سے پی پی 45پر پی ٹی آئی کے احمد خان بھچر 36543 ووٹ حاصل کر کے کامیاب ہو گئے۔ مسلم لیگ ن کے علی حیدر نور نیازی 12345 ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر رہے۔ پی پی 200 ملتان سے مسلم لیگ ن کے شوکت حیات بوسن کامیاب ہو گئے۔ پی پی 40 سے مسلم لیگ ن کے وارث کلو، پی پی 39 سے ملک جاوید اعوان رکن صوبائی اسمبلی منتخب ہو گئے۔ پی پی 163 شیخوپورہ سے مسلم لیگ ن کے خرم اعجاز چٹھہ 36927 ووٹ لیکر کامیاب ہوئے۔ آزاد امیدوار رانا اعجاز نے 12700 ووٹ لئے۔ پی پی 52 چک جھمرہ سے مسلم لیگ ن کے افضل ساہی کامیاب ہوئے، پی پی کے منظور احمد کو شکست ہوئی، پی پی 168 سے آزاد امیدوار رانا علی سلمان 22396 ووٹ لیکر جیت گئے۔ ان کے مدمقابل مسلم لیگ ن کے رانا تنویر ناصر نے 16221 ووٹ حاصل کئے۔ سیالکوٹ سے پی پی 121 پر مسلم لیگ (ن) کے رانا محمد اقبال ہرناہ کو پی ٹی آئی اور پیپلز پارٹی کے امیدواروں پر واضح سبقت حاصل ہے۔ پی پی 123 میں مسلم لیگ (ن) کے چوہدری محمد اکرام کو پی ٹی آئی کے امیدوار میر عمر فاروق مائر پر چند ہزار کی برتری حاصل ہے۔ پی پی 124۔ 125 میں بھی مسلم لیگ (ن) کے امیدوار لیڈ کر رہے ہیں۔ حلقہ اےن اے 62 جہلم (1) سے مسلم لیگ ن کے امیدوار چوہدری خادم حسین 50525ووٹ لے کر سر فہرست تھے۔ پی پی 24، پی پی 25 جہلم، پی پی 26، پی پی 27 کے پولنگ سٹیشنوں سے غیرسرکاری و غیرحتمی الیکشن نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کے امیدواروں کو اپنے حریفوں پر واضح برتری حاصل ہے۔ پی پی 24 میں مسلم لیگ ن کے راجہ اویس خالد 22188 ووٹ کے ساتھ پہلے نمبر پر، پی ٹی آئی کے کرنل (ر) محمد تاج 9458ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر، 50پولنگ سٹےشن سے مسلم لیگ ن کے امےدوار مہر محمد فیاض 19146 ووٹ کے ساتھ پہلی پوزیشن پر اور پی ٹی آئی کے چوہدری عابد 8530ووٹ لے کردوسرے نمبر پر ہیں۔ پی پی26 میں مسلم لیگ ن کے امیدوارچوہدری لال حسین 14957 ووٹوں کے ساتھ پہلے، پی ٹی آئی کے عثمان چوہان 8790 ووٹ حاصل کر کے دوسرے نمبر پر ہیں۔ پی پی27 میں 82 پولنگ اسٹےشن سے غیر سرکاری و غیر حتمی نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کے امےدوار چوہدری نذر گوندل 23734 ووٹ حاصل کر کے پہلے ق لیگ کے چوہدری عابد جوتانہ 14392 کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔

 

پی پی 165 شیخوپورہ سے آزاد امیدوار علی اصغر منڈا 41165 ووٹ لیکر جیتے۔ پی پی 105 حافظ آباد سے مسلم لیگ ن کے ملک فیاض کو برتری حاصل ہے۔ پی پی 2 راولپنڈی سے مسلم لیگ ن کے راجہ محمد علی کامیاب ہوئے۔ پی پی 11 راولپنڈی سے تحریک انصاف کے راشد حفیظ ڈار جیت گئے۔ پی پی 174 سے مسلم لیگ ن کے جمیل حسن گڈ خان 7177 ووٹ لیکر جیت گئے۔ انکے مدمقابل آزاد امیدوار آغا علی حیدر نے 18080 ووٹ لئے۔ پی پی 169 سے مسلم لیگ ن کے چودھری سجاد گجر 20400 ووٹ لیکر کامیاب ہوئے۔ پی پی 261 سے آزاد امیدوار عامر گوپانک کامیاب رہے۔ پی پی 31 سرگودھا 4 سے آزاد امیدوار مظہر علی رانجھا کامیاب رہے۔ انہوں نے 22954 ووٹ حاصل کئے۔ پی ٹی آئی کے انصر اقبال ہرل نے 14423 ووٹ لئے۔ پی پی 82 جھنگ 6 سے مسلم لیگ ن کے حامی میاں محمد اعظم چیلہ سیال 32680 ووٹ لیکر کامیاب ہو گئے۔ آزاد امیدوار غضنفر علی خان جیوانہ نے 30100 ووٹ لئے۔ پی پی 168 شیخوپورہ 7 سے آزاد امیدوار علی سلمان 22396 ووٹ کے ساتھ کامیاب رہے۔ مسلم لیگ ن کے رانا تنویر احمد ناصر نے 16521 ووٹ لئے۔ پی پی 33 سرگودھا 6 سے مسلم لیگ ن کے چودھری عبدالرزاق ڈھلوں 22314 ووٹ لیکر کامیاب رہے۔ پی ٹی آئی کے چودھری آصف علی بگا نے 14231 ووٹ لئے۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now
Sign in to follow this  

×