Jump to content
URDU FUN CLUB
Sign in to follow this  
khoobsooratdil

جیسی کرنی ویسی بھرنی

Recommended Posts

سمیر  اپنے گاؤں سے شہر تعلیم حاصل کرنے کی غرض سے آیا تھا شہر کے کالج میں  تعلیم حاصل کرتے ہوئے اُسے تقریباً پانچ سال کا عرصہ ہو چکا تھا۔ ان پانچ  سالوں میں وہ اسکی ہم جماعت غزالہ کی محبت میں بھی گرفتار ہو اتھا۔ اب وہ  غزالہ کو کسی طرح اپنے سے دور نہیں دیکھنا چاہتا تھا، غزالہ بھی اُسے چاہنے  لگی تھی۔
 
 ایک دن جب غزالہ نے اپنی امّی سے یہ خواہش ظاہر کی کہ  وہ سمیر سے ہی شادی کرنا چاہتی ہے تو اسکے والدین آگ بگولہ ہو گئے اور  انھوں نے اسکی خواہش کو ٹھکرا دیا۔والدین کے انکار کے بعد سمیر نے غزالہ کو  چپ چاپ شہر چھوڑ کر کسی دوسرے شہر اسکے ہمراہ چلنے کے لئے راضی کر لیا۔
 
 اب سمیر اپنے کمرے میں بکھرے سامان کو سمیٹ رہا تھا انھیں آج رات ایک بجے آنے والی ٹرین سے شہر چھوڑ نا تھا۔
 
 ابھی وہ اپنے سامان کی پیکنگ کر ہی رہا تھا کہ اسکے موبائل کی گھنٹی بج  اٹھی۔ موبائل پر آیا فون نمبر اسکے گھر کے پڑوس کا تھا۔ اُس نے موبائل اپنے  کانوں سے لگا لیا۔ اسکے والد درد بھری آواز میں اس سے کہہ رہے تھے۔
 
 "بیٹا تمہاری بہن شہر سے آئے ایک نوجوان کے ساتھ پتہ نہیں کہاں چلی گئی ہے تم فوراً چلے آؤ خاندان کی آبرو خطرے میں ہے۔!!"



Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now
Sign in to follow this  

×